اقوام متحدہ کا چارٹر محکوم اقوام کو آزادی کا حق دیتا ہے : راجہ ذوالقرنین

مظفر آباد (آئی این پی) آزاد جموں و کشمیر کے صدر راجہ ذوالقرنین خان نے کہا ہے کہ عالمی برادری مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے اپنا کردار ادا کرے۔ ظلم و جبر کے ذریعے آزادی کے راستوں کو روکا نہیں جا سکتا۔ دہشت گردی اور آزادی کی تحریکو ںمیں فرق ہوتا ہے۔ سکھوں اور ڈوگروں کے ظلم کا دلیری سے کشمیریوں نے مقابلہ کیا، اقوام متحدہ کا چارٹر محکوم اقوام کو آزادی کا حق دیتا ہے۔ اکتوبر 2005ءکے تباہ کن زلزلے میں جو کردار ادا کیا اسے بھلایا نہیں جا سکتا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز فارن سروسز میں زیر تربیت 50 ممالک سے زائد کے اتاشیوں اور ایڈوائزرز کو ایوان صدر میں اپنی طرف سے دیئے گئے ڈنر کے موقع پر بریفنگ دیتے ہوئے کیا۔ عشائیہ تقریب میں آزاد کشمیر کی اعلیٰ بیورو کریسی اور ان کی بیگمات نے بھی شرکت کی۔ آزاد کشمیر کے صدر نے تفصیلی بریفنگ کے دوران کہا کہ زندہ کھالیں اتروانے والی قوم کو کبھی بھی غلام نہیں رکھا جا سکتا۔ 1948-49ءکی اقوام متحدہ کی قرارداد وں کے مطابق حل کر کے کشمیریوں کو باوقار آزادی دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ 1940ءمیں قرارداد لاہور کے موقع پر منٹو پارک میں کشمیری قیادت نے قائداعظم کے ہاتھ سیاسی بیعت کر کے اپنے مقدر کا فیصلہ پاکستان سے وابستہ کر دیا تھا۔