’’باغیوں نے کیمیائی ہتھیار چلائے‘‘ شام نے نئے شواہد روس کو دیدیئے

جنیوا، واشنگٹن، ماسکو (نیوز ایجنسیاں) روس کے ڈپٹی وزیر خارجہ کے مطابق شامی حکومت نے روس کو باغیوں کی جانب سے کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال سے متعلق نئے’’مادی شواہد‘‘ فراہم کئے ہیں۔ ڈپٹی وزیر خارجہ سرگے رائبکوف نے مزید کہا ہے کہ اقوام متحدہ کے معائنہ کاروں کی کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال سے متعلق رپور ٹ  جانبدارانہ ہے۔ اقوام متحدہ نے روس کے اس دعوے کو مسترد کردیا۔  نیویارک میں سلامتی کونسل کے پانچ مستقل ممبران کے سفیروں کی ملاقات ہوئی ہے جس میں شام کے کیمیائی ہتھیاروں کو محفوظ بنانے کے سلسلے میں قراردار پر غور کیا گیا ہے۔قرارداد میں الفاظ کے استعمال کے بارے میں چند اہم تنازعات ہیں۔کیمیائی اسلحہ انسپکٹرز کی ٹیم نے دوبارہ شام جانے اور مزید مقامات پر تحقیقات کرنے کا اعلان کیا ہے۔  امریکہ کے سابق وزیر دفاع رابرٹ گیٹس نے کہا ہے بشارالاسد کو جنگی مجرم قرار دینا اور ان کی گرفتاری کا وارنٹ جاری کرنا چاہئے۔وزیر دفاع ہیگل نے کہا فوجی کارروائی کی دھمکی برقرار ہے۔ نیٹو کے سیکرٹری جنرل اینڈرس فوگ راسموسن نے کہا ہے کہ شام کی جانب سے کیے جانے والے کیمیائی ہتھیار ختم کرنے کا وعدہ پورا کرانے کے لیے فوجی کارروائی کا آپشن کھلا رہنا چاہیے۔