بنگلہ دیش : جماعت اسلامی کے رہنما کو سزا کیخلاف مظاہرے‘ جھڑپیں جاری‘ تین جاں بحق

بنگلہ دیش : جماعت اسلامی کے رہنما کو سزا کیخلاف مظاہرے‘ جھڑپیں جاری‘ تین جاں بحق

ڈھاکہ (اے ایف پی) بنگلہ دیشی سپریم کورٹ کی جانب سے جماعت اسلامی کے رہنما عبدالقادر کو گزشتہ روز سزائے موت کا فیصلہ سنائے جانے کے خلاف ملک گیر ہڑتال کی گئی۔ اس موقع پر جماعت اسلامی کے کارکنوں نے زبردست مظاہرے کئے اور جھڑپوں میں3 افراد جاں بحق ہو گئے۔ جماعت اسلامی نے 48گھنٹوں کی ملک گیر ہڑتال کا اعلان کیا۔ ہلاک ہونیوالا شخص رکشہ ڈرائیور تھا جو مظاہرین کے پتھرا¶ سے زخمی ہونے کے بعد دم توڑ گیا۔ پولیس حکام کے مطابق رکشہ ڈرائیور کو تلہ چار کے علاقے میں پتھرا¶ کر کے ہلاک کیا گیا۔ ہڑتال کے موقع پر ڈھاکہ سمیت ملک بھر میں کاروباری اور تعلیمی ادارے بند رہے اور سڑکوں پر ٹریفک بھی نہ ہونے کے برابر تھی۔پولیس پر دیسی ساختہ چھوٹے بم پھینکے گئے۔ ڈھاکہ میں عدالت عظمیٰ کی جانب سے جماعت اسلامی کے نائب جنرل سیکرٹری عبدالقادر مولا کو گزشتہ روز سزائے موت سنائی گئی تھی۔ انہوں نے 71ءکی جنگ میں جنگی جرائم کے الزامات کیخلاف رہائی کی اپیل کی تھی جس کے بعد عدالت نے فیصلہ سناتے ہوئے 7ماہ قبل دی گئی ان کی عمر قید کو سزائے موت میں تبدیل کر دیا۔ جماعت اسلامی کا موقف ہے کہ ان کے رہنما¶ں کو سازش کے تحت سزا دی جا رہی ہے۔
بنگلہ دیش