” قذافی کے قافلے میں شامل تمام افراد کو بے دردی سے گولیاں ماری گئیں“

طرابلس/نیویارک(آئی این پی) لیبیا کے مقتول رہنما کرنل معمر قذافی کے خلاف نبرد آزما باغی انسانی حقوق کی سنگین پامالی کے مرتکب ہو رہے ہیں۔ انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے ناقابل تردید ثبوتوں کی روشنی میں تیارکردہ رپورٹ کے مطابق کرنل معمر قذافی کی گرفتاری کے بعد باغیوں نے مختلف حراستی مراکز میں رکھے سینکڑوں مخالفین کو ماورائے عدالت قتل کر دیا تھا۔رپورٹ میں کرنل معمر قذافی کی 20 اکتوبر 2011 کو سرت شہر سے گرفتاری کے مناظر بھی دکھائے گئے ہیں۔ انسانی حقوق کے ادارے نے دعوی کیا ہے کہ انہوں نے کرنل قذافی کی گرفتاری کے وقت مصراتہ شہر میں باغیوں کے حوالے سے ٹھوس ثبوت جمع کئے ہیں جنہوں نے کرنل کی گرفتاری کے بعد ان کے قافلے میں شامل تمام افراد سے ان کا اسلحہ چھینا اور نہایت بے دردی کے ساتھ انہیں گولیاں مار کر قتل کر دیا تھا۔ خود کرنل معمر قذافی کو گولیاں مار شدید زخمی کیا گیا۔ بعد ازاں انہیں سڑک پر گھسیٹ کر قتل کیا گیا۔