مقبوضہ کشمیر: فوجی بنکروں کی تعمیر کیخلاف زبردست احتجاج: کالے قوانین منسوخ کئے جائیں‘ ایمنسٹی انٹرنیشنل

مقبوضہ کشمیر: فوجی بنکروں کی تعمیر کیخلاف زبردست احتجاج: کالے قوانین منسوخ کئے جائیں‘ ایمنسٹی انٹرنیشنل

سری نگر (اے پی پی) انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے ایک بار پھر کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیرمیں نافذ پبلک سیفٹی ایکٹ ایک کالا قانون ہے جسکی منسوخی ضروری ہے۔کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق ڈائریکٹر پروگرامز برائے بھارت ششی کمار ویلاتھ کی سربراہی میں ایمنسٹی انٹرنیشنل کی تین رکنی ٹیم نے سرینگر میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کالے قانون کی منسوخی میں قابض انتظامیہ کے لیت و لعل پر شدید تشویش کا اظہار کیا۔ٹیم کا کہناتھا کہ معمولی شک کی بنیاد پرکسی کو گرفتار کرنا انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے اور کسی بھی گرفتارشخص کوعدالت میںپیش کرنا لازمی ہے۔ٹیم کے دیگر دو ممبروںمیں مسز سنیتا اور راہیلہ نار چہور شامل ہیں۔ ٹیم نے میر واعظ عمر فاروق، یاسین ملک اور دیگر رہنماﺅں سے سرینگر میں ملاقات کی۔ ملاقات میں مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی صورت حال پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ بزرگ کشمیری حریت رہنما سید علی گیلانی نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بھارت اور اسکی کٹھ پتلی انتظامیہ کو خبر دار کیا کہ اگر انہوںنے غیر کشمیریوں کو کشمیرمیں آباد کرنے کا سلسلہ ترک نہ کیا تولوگ سڑکوںپرنکل آئیں گے۔ مقبوضہ کشمیر کی ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر ظفر قریشی نے عبدالقادر سیلانی ایڈووکیٹ کی شہادت کی برسی کے موقع پر سرینگرمیں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی تحریک کومقصد کے حصول تک جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا۔ اوڑی قصبے کے مرکزی چوک میں لوگوںکی ایک بڑی تعداد نے چورنڈہ گاﺅں میں بھارتی فوج کی طرف سے بنکروں کی تعمیر کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔