بنگلہ دیش: جماعت اسلامی کے نائب صدر عبدالسبحان کو بھی سزائے موت سنا دی گئی

ڈھاکہ+ لاہور (نوائے وقت نیوز+ نیوز ایجنسیاں+ خصوصی نامہ نگار) بنگلہ دیش میں نام نہاد ٹربیونل نے جماعت اسلامی کے نائب صدر عبدالسبحان کو سزائے موت سنا دی۔ جنگی جرائم کے الزام میں جماعت اسلامی کے 9ویں رہنما کو سزا ہوئی ہے۔ 79 سالہ عبدالسبحان کو 71ء کی جنگ میں پاکستان کی حمایت پر نسل کشی، اغوا، تشدد اور انسانیت کیخلاف مظالم کے الزام میں یہ سزا دی گئی۔ ڈھاکہ میں عدالت کے باہر نامعلوم افراد نے تین دیسی ساختہ بم پھینکے۔ وکیل استغاثہ زید المعلوم نے دعویٰ کیا جماعت اسلامی کے نائب صدر پر 9میں سے 6الزامات ثابت ہو گئے ہیں۔ فیصلے کے وقت عبدالسبحان عدالتی کمرے میں موجود تھے اور اس موقع پر سخت حفاظتی انتظامات کئے گئے تھے۔ عبدالسبحان کے وکیل نے کہا الزامات من گھڑت ہیں۔ فیصلے کیخلاف اپیل کرینگے۔ ادھر امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے بنگلہ دیش میں سابق رکن اسمبلی اور بزرگ سیاستدان مولانا عبدالسبحان کو سزائے موت سنائے جانے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ بنگلہ دیش کی نام نہاد عدالت حسینہ واجد حکومت کے اشارے پر اس کے سیاسی مخالفین کو انتقام کا نشانہ بنا رہی ہے۔ مولانا عبدالسبحان کا جرم یہ تھا کہ انہوں نے متحدہ پاکستان کی حمایت کی تھی۔ فیصلہ سراسر انتقامی کارروائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ سمیت انسانی حقوق کی تنظیموں نے اس ظلم کے خلاف کوئی آواز بلند نہیں کی۔ حسینہ حکومت کی انتقامی کارروائیوں سے بنگلہ دیش جمہوریت کی پٹڑی سے اتر سکتا ہے۔