ٹیکساس: کھاد پلانٹ میں دھماکہ‘ 80 افراد ہلاک‘ سینکڑوں زخمی‘ درجنوں عمارتیں تباہ

ویکو (آن لائن + اے ایف پی ) امریکی ریاست ٹیکساس میں کھاد کے پلانٹ میں دھماکے سے 80 افراد ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہو گئے۔ واقعہ ریاست ٹیکساس میں ویکو میں پیش آیا۔ حکام کا کہنا تھا کہ دھماکے سے ایک نرسنگ ہوم سمیت درجنوں عمارتیں اور گھر بری طرح متاثر ہوئے۔ ٹیکساس پبلک سیفٹی ڈےپارٹمنٹ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ممکنہ طور پر دھماکے سے سینکڑوں افراد ہلاک یا زخمی ہوئے ہیں، انہوں نے کہا کہ پلانٹ کے قریب واقع نرسنگ ہوم گر گیا جس میں متعدد افراد پھنسے ہوئے ہیں۔ ادھر ویسٹ ایمرجنسی میڈیکل سروسز کے ڈائریکٹر جارج سمتھ نے کہا کہ اس واقعہ میں 80 افراد ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہوئے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ابھی تک ہسپتالوں میں 200 کے قریب زخمی افراد کو لایا گیا جن میں سے بیشتر کی حالت تشویشناک ہے جبکہ ویکوکے اسسٹنٹ فائر چیف ڈان ییگر کا کہنا تھا کہ پلانٹ کے اندر متعدد دھماکوں کی آوازیں سنی گئی ہیں تاہم یہ دھماکے کیسے ہوئے‘ فوری طور پر ان کی وجوہات معلوم نہیں ہو سکیں۔ اس کے علاوہ پلانٹ کے قریب متعدد عمارتیں بھی آگ کی زد میں آئی ہیں جن میں ایک مڈل سکول بھی شامل ہے۔ واقعہ کے بعد علاقے میں بجلی کا نظام بری طرح متاثر ہوا اور پورا علاقہ اندھیرے میں ڈوب گیا۔ کا¶نٹی شیریف پارنیل میکنامارا نے کہا یہ بہت بڑی تباہی ہے۔ یہ سارا ملبہ جنگ زدہ علاقہ دکھائی دیتا ہے۔ امریکی پولیس نے شہریوں کو پرامن اور گھروں میں رہنے کی ہدایت کی ہے جبکہ ہوٹلوں اور عوامی مقامات پر سکیورٹی سخت کر دی ہے۔ سکیورٹی اداروں نے دھماکے کی تحقیقات شروع کر دی ہے۔ امریکی صدر بارک اوبا ما نے سکیورٹی حکام سے دھماکے کے متعلق رپورٹ طلب کر کے تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔ زہریلی گیس سے بچاﺅ کیلئے لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کر دیا گیا ہے۔ پولیس حکام کا کہنا ہے کہ دھماکے مےں 15 افراد ہلاک اور 160 زخمی ہوئے۔ اے ایف پی کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ اب تک 15 ہلاکتوں کی تصدیق ہو چکی ہے تاہم زخمیوں میں متعدد کی حالت تشویشناک ہے جس کی وجہ سے ہلاکتیں بڑھنے کا خدشہ ہے اور تباہ ہونے والے گھروں کے ملبے سے لوگوں کی تلاش کا عمل جاری ہے۔ دھماکے کی وجہ سے فیکٹری اور گرد و نواچ میں واقع 100 عمارتوں اور گھروں کو شدید نقصان پہنچا ہے۔ امریکی حکام کے مطابق متاثرہ علاقے میں ریسکیو کا کام جاری ہے اور پلانٹ سے خارج ہونے والی زہریلی گیس سے بچا¶ کے لئے قریبی علاقوں کے لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کر دیا گیا۔ ٹیکساس کے گورنر نے ایک بیان میں کہا کہ ہم حالات کو دیکھ رہے ہیں اور واقعے کے متعلق معلومات اکٹھی کر رہے ہیں۔ بی بی سی کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ اب تک اس واقعے میں کم از کم 15 افراد کی ہلاکت کی تصدیق ہوئی۔ ولیم سوانٹن کا کہنا ہے کہ وہ صحیح تعداد نہیں بتا سکتے تاہم یہ 5 سے 15 تک ہو سکتی ہیں۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ کارخانے میں ہونے والا دھماکہ ایک ”بگولے“ کی مانند تھا۔ دریں اثناءپاکستان نے ٹیکساس کی کھاد فیکٹری میں ہونے والے حادثے کے نتیجے میں قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر امریکی حکومت سے گہرے دکھ اور غم کا اظہار کیا ہے۔