فوجی عدالتیں بن چکیں اب بحث کی بجائے آگے بڑھنے کا وقت ہے: میجر جنرل عاصم باجوہ

لندن (آن لائن+ نوائے وقت رپورٹ) ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل عاصم سلیم باجوہ نے کہا ہے کہ فوجی عدالتیں بن چکی ہیں اب بحث کی بجائے آگے چلنے کا وقت ہے۔ برطانوی حکام سے غیرریاستی عناصر کا معاملہ بھی اٹھایا اور معاونت روکنے میں مدد بھی مانگی ہے۔ مغربی ممالک میں پناہ لئے چند افراد بلوچستان میں دہشت گردی کروا رہے ہیں۔ نجی ٹی وی کو انٹرویو میں عاصم سلیم باجوہ نے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت ہے اور ایکٹ آف پارلیمنٹ کے ذریعے فوجی عدالتیں بن گئی ہیں جس کی قرارداد دونوں ایوانوں سے منظور ہوئی ہے اور ہم نے کام بھی شروع کر دیا ہے۔ اب ہمیں بحث کی بجائے آگے چلنا ہے اور یہ وقت آگے بڑھنے کا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فوجی عدالتوں میں مقدمات آئے تو جلد سے جلد فیصلے ہونگے، نارمل عدالتی نظام بحال ہے۔ ترجمان پاک فوج نے کہا کہ برطانیہ میں آرمی چیف کی اعلیٰ حکام سے ملاقاتیں ہوئی ہیں۔ پاکستان کے نقطہ نظر کی تائید ہوئی ہے، برطانوی حکام سے دہشت گردی خطے میں امن و امان، دفاع اور دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حالیہ دورہ برطانیہ میں غیر ریاستی عناصر کا معاملہ اٹھایا ہے اور دہشت گردوں کی مالی معاونت روکنے کیلئے بھی مدد مانگی ہے۔ مغربی ممالک میں پناہ لینے والے چند افراد بلوچستان کے شہریوں کو بھڑکا رہے ہیں اور بلوچستان میں دہشت گردی کروا رہے ہیں جس کے باعث تمام عوام بلوچستان اور پاکستان کا نقصان ہو رہا ہے۔
عاصم باجوہ