مقبوضہ کشمیر: سانحہ شوپیاں کے دونوں شہدا سپردخاک‘ پہیہ جام ہڑتال ‘ مظاہرے ‘ جھڑپیں ‘ بیسیوں زخمی

مقبوضہ کشمیر: سانحہ شوپیاں کے دونوں شہدا سپردخاک‘ پہیہ جام ہڑتال ‘ مظاہرے ‘ جھڑپیں ‘ بیسیوں زخمی

سری نگر (اے این این)مقبوضہ کشمیر میں مجاہدین قرار دے کر شہید کئے گئے دونوں نوجوان سپرد خاک،وادی بھر میں پہیہ جام اور شٹر ڈاؤن ہڑتال،احتجاجی مظاہروں اور جھڑپوں میں20 اہلکاروں سمیت بیسیوں افراد زخمی،مشتعل مظاہرین کا فورسز پر شدید پتھراؤ2گاڑیاں تباہ،20سے زائد افراد کو گرفتار کر لیا گیا۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز بھارتی فوج اور پولیس کی جانب سے مجاہدین قرار دے کر شہید کئے گئے مقبوضہ کشمیر کے دونوں نوجوانوں کو ہزاروں سوگوران کی موجودگی میں سپرد خاک کر دیا گیا۔شوپیان کے گگلورو پنجورہ علاقہ میں  بھارتی فورسز نے حزب المجاہدین سے تعلق کا الزام لگا کر راشد احمد شیخ اور عابد احمد راتھر کو شہید کر دیا گیا تھا  جن کی  نعشیں  آبائی علاقوں کو پہنچیں تو کہرام مچ گیا  ہزاروں افراد نے دونوں شہداء کے آبائی علاقوں کی طرف مارچ کیا۔ دونوں کو اسلام و آزادی کے حق میں فلک شگاف نعروں کے بیچ پر نم آنکھوں سے ان کے آبائی علاقوں میں سپرد خاک کیا گیا۔ حریت کانفرنس(گ)کے چیئرمین سید علی گیلانی نے جنازہ کے جلوسوں سے ٹیلیفونک خطاب کیا۔ قصبہ شوپیان اور اسکے کم و بیش تمام مضافاتی علاقوں میںمکمل ہڑتال رہی۔ جس کے نتیجے میں دکانیں اور کاروباری ادارے مکمل طور بند رہے   ۔اس صورتحال کی وجہ سے قصبہ اور اس کے گردونواح میں معمول کی زندگی مفلوج ہو کررہ گئی۔  مشتعل مظاہرین نے پولیس پر کئی اطراف سے زبردست پتھرائو کیا جس کے جواب میں ان پر لاٹھی چارج کے ساتھ ساتھ آنسو گیس کے گولے داغے گئے۔ دوسری جانب بانڈی پورہ  میںگرفتاریوں اور فورسز کی طرف سے دکانداروں کی مارپیٹ کے خلاف دوسرے روز بھی مکمل ہڑتال رہی اور لوگوں نے احتجاجی جلوس نکالے۔ گذشتہ دنوں کی ہڑتال اور پر تشدد جھڑپوں کے دوران پولیس نے20سے زائد نوجوانوں کو گرفتار کرلیا تھا ۔ مقامی لوگوں نے الزام عائد کیا کہ مقامی کیمپ سے وابستہ اہلکاروں نے دکانداروں اور راہگیروں کو شدید زدوکوب کیا اور بلا اشتعال کئی افراد کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا ۔ لوگوں نے مزید بتایا کہ عام کپڑوں میں ملبوس فورسز اہلکاروں نے سٹیٹ بنک کے عملے کو بھی زبردست مارپیٹ کا نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں بنک کا ایک ڈرائیور شہبازاحمد زخمی ہوگیا۔ دریں اثناء حریت کانفرنس کے تینوں دھڑوں،حزب المجاہدین اور دیگر مزاحمتی قائدین نے شوپیاں میں دو نوجوانوں کی شہادت کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے شہداء کو زبردست انداز میں خراج عقیدت  پیش کیا ہے اور عالمی برادری سے مطالبہ کیا  کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں اور ریاستی دہشتگردی کا نوٹس لیا جائے اور بھارت پر دباؤ ڈالا جائے کہ وہ کشمیری عوام کو ان کا حق خود ارادیت دے۔۔ایک بیان میں حریت کانفرنس کے سنیئر رہنما اور لبریشن فرنٹ چیئرمین جاوید احمد میر نے  کہا کہ حریت پسند کشمیرکی آزادی کی خاطر اپنا گرم  لہو بہارہے ہیں اور دوسری طرف بدقسمتی سے کچھ اضلاع میں تحصیلوں کی سیاست پر جشن منایا جارہا ہے۔