سعودی جامعہ میں طالبات کے ٹراﺅزر اور سکرٹس پہننے پر پابندی عائد

سعودی جامعہ میں طالبات کے ٹراﺅزر اور سکرٹس پہننے پر پابندی عائد

 ریاض(آن لائن)سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں واقع شہزادی نورہ بنت عبدالرحمن یونیورسٹی نے طالبات پر ٹراﺅزر (پاجامے) اورسکرٹس پہننے پر پابندی عائد کر دی ہے اور ان پر زور دیا ہے کہ وہ کیمپس کی حدود میں لباس کے ضابطے کی پابندی کریں۔جامعہ نے ایک بیان میں خاص طور پرسکول آف آرٹ اینڈ ڈیزائن کی طالبات کو مخاطب کیا ہے اور انھیں ضابطہ لباس کی پابندی کے لیے کہا گیا ہے لیکن اس کی وجہ نہیں بتائی گئی۔لباس کے نئے ضابطے کے تحت طالبات پر ایسی سکرٹس پہننے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے جن سے جسم عریاں نظر آ سکتا ہو۔ انھیں سیاہ اور گرے رنگ کی موٹی سکرٹس پہننے کی اجازت ہو گی۔طالبات کو جامعہ کی حدود میں کسی بھی رنگ کی قمیض پہننے کی اجازت ہے اس سے قبل ایک اور سعودی جامعہ شاہ عبدالعزیز یونیورسٹی نے ایک بیان میں کہا تھا کہ وہ خواتین کے کیمپس میں ٹراوزر پہننے کے خلاف نہیں ہے لیکن یہ پاجامے شائستہ انداز میں ڈیزائن کیے گئے ہوں اور عوامی مزاج سے ہم آہنگ ہوں۔