اقوامِ متحدہ کے مطابق شام کے شہر حولہ میں ایک سو آٹھ افراد کے قتل میں شام کی فوج اور ملیشیا دونوں ذمہ دار ہیں۔

اقوامِ متحدہ کے مطابق شام کے شہر حولہ میں ایک سو آٹھ افراد کے قتل میں شام کی فوج اور ملیشیا دونوں ذمہ دار ہیں۔

پچیس اور چھبیس مئی کو حولہ میں ہونے والے قتلِ عام کو شام میں مارچ دو ہزار گیارہ سے لے کر اب تک عام شہریوں پر ہونے والا سب سے خوفناک حملہ قرار دیا جا رہا ہے۔اقوامِ متحدہ کی انسانی حقوق کی کونسل کی تشکیل کردہ انکوائری رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ حکومتی فوج اور حزبِ مخالف کے گروپوں نے جنگی جرائم کیے ہیں۔ رپورٹ میں الزام لگایا گیا ہے کہ شام کی حکومت نے اعلیٰ سطح پر انسانی حقوق کی ان خلاف ورزیوں کی منظوری دی تھی۔ایک سو دو صفحات پر مشتمل رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ان خلاف ورزیوں میں قتل، اذیت اور جنسی تشدد شامل ہے،دوسری جانب شام میں حکومت مخالف کارکنوں کا کہنا ہے کہ ملک کے دوسرے بڑے شہر حلب کے قریبی علاقے عزاز میں جنگی طیاروں کی بمباری سے تیس افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔