مقبوضہ کشمیر:120 نوجوانوں کی شہادت پر عدالتی کمشن کی رپورٹ مضحکہ خیز ہے: حریت کانفرنس

سرینگر (اے این این) مقبوضہ کشمیر میں حریت قیادت نے120نوجوانوں کی شہادت کی تحقیقات کرنے والے کمشن کے سربراہ کے بیان پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ جسٹس کول نے مجرمان کے جرائم سے توجہ ہٹانے کی کوشش کی، سزا کا تعین نہ کر کے عدل و انصاف کے تقاضے نظر انداز کئے گئے۔ جسٹس کول کا بیان حد درجہ مضحکہ خیز اور ورثاء کے زخموں پر نمک پاشی کے مترادف ہے،کمشن نے سب کچھ بھارتی سرکار کی ایما پر کیا ہے۔حریت کانفرنس(ع) کے ترجمان کی طرف سے جاری بیان میںجسٹس کول کے بیان کو جانبدارانہ تحقیقات کا مظہر قرار دے کر یکسر مستردکردیا ہے۔ راجیہ سبھا میں بی جے پی رکن پارلیمان اویناش رائے کھنہ کے ایک سوال کے جواب میں وزیر مملکت برائے امور داخلہ کرن رجیجو کا کہنا تھا کہ پنڈتوں کو شہریت دینے کا معاملہ ریاستی حکومت کا اختیار ہے۔