یمن میں آپریشن : القاعدہ کے 8 ارکان گرفتار‘ 2 سکیورٹی اہلکار ہلاک

صنعا ( اے ایف پی) یمن کی حکومت نے ایک کارروائی کے دوران القاعدہ کے آٹھ مبینہ ارکان کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے صنعا میں وزارت دفاع سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ ملک کے جنوبی حصے میں گزشتہ ہفتے ایک کارروائی کے دوران دہشت گردوں کے ایک اڈے پر چھاپہ مارا اور القاعدہ سے منسلک ایک گروہ کے دو رہنماﺅں سمیت آٹھ ارکان کو گرفتار کر لیا وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ اس کارروائی میںسکیورٹی فورسز کے دو اہلکار جاں بحق ہو گئے گرفتار دہشت گرد جنوبی علاقوں میں یمنی فوج اور حساس تنصیبات پر حملوں کی منصوبہ بندی کر رہے تھے۔یمن کی اپیل کورٹ نے امریکی سفارت خانے پر حملے میں ملوث چار القاعدہ جنگجوﺅں کی موت کی سزا برقرار رکھی جبکہ اپیل کورٹ نے دیگر دو مجرموں کی موت کی سزا ختم کرتے ہوئے اسے12-12 سال قید کی سزا کا حکم سنا دیا۔ موت کی سزا پانے والے القاعدہ کے چار جنگجوﺅں پر2008ءمیں بیلجئیم کے دو سیاحوں کو قتل اور امریکی سفارتخانے پر حملے کے الزامات تھے۔ عدالتی حکام نے بتایا کہ اپیل کورٹ نے القاعدہ کے دیگر دو مجرموں کی موت کی سزا کا لعدم قرار دیتے ہوئے دونوں کو12-12 سال قید کی سزا کا حکم سنا دیا۔ دونوں مجرم یمن کے جنوبی علاقے میں پولیس پر حملے میں ملوث پائے گئے تھے۔ عدالت اپیل نے پولیس اور تنصیبات پر حملوں کے الزام میں گذشتہ روز القاعدہ کے 10 ارکان کو دی گئی 15 برس قید کی سزا بھی برقرار رکھی۔