اسرائیل کے ساتھ براہ راست مذاکرات سے کچھ حاصل نہیں ہوگا: محمود عباس

رملہ (اے پی پی) فلسطین کے صدر محمود عباس نے کہا ہے کہ موجودہ حالات میں اسرائیل کے ساتھ براہ راست مذاکرات سے کچھ حاصل نہیں ہوگا۔ محمود عباس کا کہنا ہے کہ اگر اسرائیل کا مقصد بات چیت کا آغاز صفر سے کرنا ہے تو یقیناً یہ بے معنی اور لاحاصل کوشش ہوگی۔ فلسطینی صدر نے مزید کہا کہ براہ راست مذاکرات کیلئے ٹائم ٹیبل اور فریم ورک نہایت ضرری ہے۔ ہم کبھی بھی کسی نئے مذاکرات میں شامل نہیں ہوں گے جو مزید 10 سالوں پر محیط ہوں۔ فلسطینی صدر کے قریبی ذرائع نے غیر ملکی میڈیا کو بتایا کہ رواں ہفتے امریکی خصوصی ایلچی جارج میچل محمود عباس کو دوبارہ مذاکرات کی ٹیبل پر لانے کی کوششیں کریں گے۔محمود عباس نے کہا کہ ہم نے اپنا وژن اور خیالات پیش کئے ہیں اگر اس میں کوئی بیش رفت ہوئی توٹھیک ورنہ ہم براہ راست مذاکرات سے کچھ حاصل نہیں ہوگا۔