کشمیری بھارت کی کسی بھی ریاست میں محفوظ نہیں‘ انہیں فرضی کیسوں میں پھنسایا جا رہا ہے : علی گیلانی

کشمیری بھارت کی کسی بھی ریاست میں محفوظ نہیں‘ انہیں فرضی کیسوں میں پھنسایا جا رہا ہے : علی گیلانی

 سرینگر (این این آئی) چیئرمین حریت کانفرنس کے بزر گ رہنما سید علی شاہ گیلانی نے کہا ہے کہ کشمیری نوجوانوں کو فرضی کیسوں میں پھنسانا محض پراپیگنڈا ہے،مذموم سازشیں کامیاب نہیں ہونگی، مسئلہ کشمیر کے حل تک جدوجہد جاری رہے گی،کٹھ پتلی انتظامیہ کو فوج اور پولیس کو استعمال کرنے کے بجائے سیاسی سطح پر ہمارا مقابلہ کرنا چاہئے،بھارت کی کوئی ریاست کشمیریوں کے لےے محفوظ نہیں،یہاں ہر جگہ ان کو شک کی نگاہ سے دیکھا جارہا ہے۔ ایک بیان میں انہوں نے فوجی کارروائی کو بلاوجہ اور غیر ضروری قرار دیتے ہوئے کہا کہ پرویز احمد ڈار تحریک حریت کا ایک رکن ہے اور وہ کسی بھی ایسے کام میں ملوث نہیں ہے، جس سے فوجی چھاپے کا کوئی جواز پیدا ہوتا۔ فوج محض پنجوں اور سرپنجوں کے اشاروں پر ہمارے کارکنوں کو تنگ اور ہراساں کرتی ہے اور انہیں بے بنیاد اور فرضی کیسوں میں پھنسانے کی کوشش کی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری ایک سیاسی تنظیم ہے اور جن لوگوں کو ہماری پالیسی کے ساتھ اختلاف ہے، انہیں فوج اور پولیس کو استعمال کرنے کے بجائے سیاسی سطح پر ہمارا مقابلہ کرنا چاہئے۔ نظریات کی جنگ میں ریاستی طاقت کے ذریعے سے لوگوں کو دبانے کی کوشش کرنا بزدلی اور کم ہمتی کی نشانی ہے اور اس کا کوئی قانونی یا اخلاقی جواز بھی نہیں ہے۔
علی گیلانی