امریکہ کا القاعدہ سے نمٹنے کیلئے عراقی فوج کو ازسر نو تربیت دینے کا فیصلہ

 امریکہ کا القاعدہ سے نمٹنے کیلئے عراقی فوج کو ازسر نو تربیت دینے کا فیصلہ

 واشنگٹن/ بغداد (اے پی پی/نمائندہ خصوصی) امریکہ نے القاعدہ سے نمٹنے کیلیے عراقی فوج کو نئے سرے سے تربیت دینے کا اصولی فیصلہ کر لیا ہے۔ عرب ٹی وی کے مطابق اس مقصد کیلئے اردن کی سرزمین استعمال کیے جانے کا امکان ہے۔ امریکہ، عراق اور اردن کے درمیان بات چیت کا سلسلہ جاری ہے۔ عراقی فورسز کو کو تربیت کی ضرورت سنی اکثریت کے صوبہ انبار میں القاعدہ کے بڑھتے ہوئے چیلنج کے بعد بطور خاص محسوس کی گئی ہے کیونکہ خدشہ ہے کہ انبار میں بھر پور فوجی کارروائی سے اعتدال پسند قبائلی قائدین بھی انتہا پسندی کی طرف جاسکتے ہیں۔ دریں اثناءعراق کا امریکی انتظامیہ سے کہنا ہے کہ عراق کیلئے اسلحے کی فروخت کی منظوری دی جائے۔ عراقی فورسز نے مقامی قبائل سے مل کر شورہ زدہ صوبے الانبار کے مرکزی شہر الرمادی کی دو بڑی کالونیوں کا کنٹرول دوبارہ سنبھال لیا۔فلوجہ کے آس پاس فوج نے جنگی ساز و سامان جمع کرنا شروع کردیا، جبکہ انسانی حقوق کی تنظیم نے کہاہے فوج کی وحشیانہ گولہ باری کے نتیجے میں فلوجہ اور رمادی کے شہری گھروں میں محصور ہوکر رہ گئے۔