پاکستانی ہائی کمشنر سے ملاقات پر علی گیلانی کو گرفتار کیا جائے : ویشوا ہندو پریشد

 پاکستانی ہائی کمشنر سے ملاقات پر علی گیلانی کو گرفتار کیا جائے : ویشوا ہندو پریشد

نئی دہلی(آن لائن) بھارت میںہندو انتہا پسند جماعت ویشوا ہندو پریشد نے نئی دہلی میںپاکستانی ہائی عبدالباسط اور بزرگ حریت رہنماء سید علی گیلانی کے درمیان ملاقات کو بھارت کی توہین قرار دیتے ہوئے سید علی گیلانی کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔ ہندو انتہا پسند رہنماء اور وشوا ہندو پریشد کے سربراہ پریوین توگڑیانے ایک بیان میں کہاہے کہ سید علی گیلانی اورعبدالباسط کے درمیان ملاقات ایک ایسے وقت میںہوئی ہے جب بھارتی پارلیمنٹ اجلاس جاری ہے اور خاص طورپر پاکستان اور بھارت کے درمیان خارجہ سیکرٹریوں کی سطح کے مذاکرات بحال ہو ئے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ ایسے وقت پر کشمیری آزادی پسند رہنماء کی یہ حرکت بھارت کی توہیں ہے اورانہیں گرفتار کرکے ان کے خلاف بغاوت کا مقدمہ چلایا جاناچاہئے۔ ادھر تحریک کشمیر نے ہندو انتہا پسند رہنماء پروین تو گڑیا کے حاسدانہ،متعصبانہ اور فرقہ ورانہ بیان کی زبردست مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ ایسے بیانات ہندو فرقہ پرستی کی واضح مثال ہے اور جموںو کشمیر کے خرمن امن میں آگ لگانے کے مترادف ہے۔تحریک کشمیر کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ جموںو کشمیر کا بھائی چارہ ہمیشہ مثا لی رہا ہے اور فرقہ ورانہ ہم آہنگی پوری دنیاخصوصاًبھارتی فرقہ پرستوں کیلئے قابل تقلید ہے۔انہوںنے کہاکہ پروین توگڑیا جیسے فرقہ پرستوں کو یہ یاد رکھنا چاہئے کہ جموںو کشمیر ایک متنازعہ خطہ ہے اور اس تنازعہ کا حل خود بھارت کے عوام کیلئے بھی امن کی نوید ہے۔