مقبوضہ کشمیرمیں بھارت کی ریاستی دہشت گردی جاری ہے ، فورسز کی فائرنگ سے ایک خاتون شہید جبکہ نو افراد زخمی ہوگئے

مقبوضہ کشمیرمیں بھارت کی ریاستی دہشت گردی جاری ہے ، فورسز کی فائرنگ سے ایک خاتون شہید جبکہ نو افراد زخمی ہوگئے

سید علی گیلانی نے آج حریت رہنما شیخ عبدالعزیز کی دوسری برسی کے موقعے پر احتجاج کی کال دے رکھی تھی ۔ ریاستی حکومت نے پامپور چلو کال کو ناکام بنانے کےلیے کرفیو نافذ کرتے ہوئے اہم رہنماؤں کو نظر بند کر دیا ہے ۔ جبکہ حریت کانفرنس کے سربراہ سید علی گیلانی نے کرفیو کے نفاذ پر ریاستی حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ دوسری جانب کشمیری طالب علم کی شہادت کے خلاف بارمولا سمیت دیگر علاقوں میں احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے ۔ ادھر پونچھ میں مجاہدین کے حملے میں تین سپشل پولیس آفیسرز اور ایک بھارتی فوجی ہلاک ہو گیا جبکہ بھارتی فوج نے فائرنگ کرکے ایک خاتون کو شہید اور نو افراد کو زخمی کر دیا ہے ۔ دوسری جانب بھارتی وزیر اعظم ڈاکٹر من موہن سنگھ نے نئی دہلی میں اعلی سطح کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں امن و امان کا قیام سیاسی طور پر ہی ممکن ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت تمام گروپوں کے ساتھ مذاکرات کے لیے تیار ہے ۔ادھر آل پارٹیز حریت کانفرنس کے سربراہ سید علی گیلانی نے سری نگر میں ایک شہید کی نماز جنازہ کے موقعے پر گفتگو کرتے ہوئے مسلسل کرفیو کے نفاذ اور پچاس سے زائد شہریوں کی ہلاکت پر قابض انتظامیہ کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا ۔ ان کا کہنا تھا کہ بھارتی قابض فوج نے پوری وادی کو جیل میں تبدیل کردیا ہے ۔