برطانیہ: عام انتخابات میں 50سے زائد پاکستانی نژاد امیدوار

برطانیہ: عام انتخابات میں 50سے زائد پاکستانی نژاد امیدوار

لندن (نیٹ نیوز) برطانیہ میں ہونے والے عام انتخابات میں 50سے زائد پاکستانی نژاد امیدوار ہیں، برطانیہ میں اس وقت 3خواتین سمیت 8مسلمان ارکان پارلیمنٹ نے سیاست میں اہم کردار ادا کیا ہے، یہ سیاست میں سرگرم رہے ہیں، ان مسلم ارکان پارلیمنٹ میں ساجد جاوید ، صادق خان، خالد محمود، انس سرور، رحمن چشتی، یاسمین قریشی اور رشنارا علی شامل ہیں۔ ساجد جاوید اپریل 2014ءمیں ڈیوڈ کیمرون حکومت میں دوسرے مسلم وزیر بنے تھے، وہ 1969ءمیں پیدا ہوئے، تاریخ میں پہلی بار 24 سال کی عمر میں چیزمنہٹن کے کمسن ترین وائس پریذیڈنٹ بنے، صادق خاں 1970ءمیں پیدا ہوئے وہ 2007ءمیں پارلمیانی امور کے بارے میں مشیر بنے، 2009ءوہ پہلے مسلم وزیر مملکت برائے ٹرانسپورٹ بنے، خالد محمود 1961ءمیں پاکستان میں پیدا ہوئے 2001ءمیں وہ دوبارہ ممبر پارلیمنٹ منتخب ہوئے، 32سالہ انس سرور سابق گورنر پنجاب چودھری محمد سرور کے بیٹے ہیں وہ اپنے والد کی جگہ مئی 2010 ءمیں گلاسگو سے منتخب ہوئے، 37سالہ رحمن چشتی پرانے کنزرویٹو سیاستدان ہیں ، 2010ءمیں وہ گلنگھم سے ممبر پارلیمنٹ بنے ، یاسمین قریشی پاکستانی نژاد لیبر پارٹی کی رکن ہیں، وہ 2010ءمیں بوسٹن سے رکن پارلیمنٹ بنیں وہ 1963ءمیں پیدا ہوئیں، 9سال کی عمر میں برطانیہ آئیں، لندن ساﺅتھ بنک یونیورسٹی سے قانون کی ڈگری حاصل کی، شبانہ محمود 1980ءمیں برمنگھم میں کشمیری خاندان میں پیدا ہوئیں، انہوں نے آکسفورڈ سے تعلیم حاصل کی اور بیرسٹر بنیں، وہ لیبر پارٹی کی جانب سے2010ءمیں رکن پارلیمنٹ بنیں، بنگلہ دیشی نژاد رشنارا علی سات سال کی عمر میں برطانیہ آئیں آکسفورڈ میں تعلیم حاصل کی، 2013ءمیں رکن پارلیمنٹ بنیں وہ 3مسلم خواتین پارلیمنٹ میں شامل ہیں۔تسمینہ گزشتہ برس بہت کم مارجن سے یورپی پارلیمنٹ کا حصہ بننے سے رہ گئی تھیں۔ 1970ءمیں لندن میں پیدا ہونے والی تسمینہ شیخ ایڈنبرا میں پلی بڑھیں، پروڈیوسر ذوالفقار احمد شیخ کی اہلیہ تسمینہ فنکارہ ہونے کے ساتھ ساتھ سکاٹ لینڈ کی مشہور سیاسی شخصیت اور قانون دان بھی ہیں، ان کے 4 بچے ہیں۔

پاکستانی/امیدوار