اسامہ کے مرنے کے بعد امریکہ نے دنیا کو گمراہ کیا:وال سٹریٹ جنرل

اسامہ کے مرنے کے بعد امریکہ نے دنیا کو گمراہ کیا:وال سٹریٹ جنرل

واشنگٹن (آن لائن) امریکی خبار’’وال اسٹریٹ جرنل‘‘ لکھتا ہے کہ امریکہ نے اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے بعد امریکیو ں سمیت دنیا کوگمرا ہ کیا۔ وائٹ ہاو س کی طرف سے القاعدہ کی جس طرح عکاسی کی گئی وہ ان دستاویزات کے متضاد تھی جو اسامہ کے کمپاو نڈ پر حملے کے وقت وہاں سے قبضے میں لی گئی۔۔ ڈیفنس انٹیلی جنس ایجنسی کے سابق ڈائریکٹر نے کہا کہ ہمیں اب بھی القاعدہ کے بڑھتے خطرات کا سامنا تھا اور یہ صرف پاکستان اور افغانستان اور عراق سے نہیں تھابلکہ یمن سے بھی تھا۔ بیوروکریٹک جنگ کے بعد ڈیفنس انٹیلی جنس ایجنسی اور سینٹ کام کے تجزیہ کاروں کی ایک محدود ٹیم کودستاویزات تک رسائی دی گئی۔تجزئیے کے مطابق اسامہ کی ہلاکت کے بعد اوباما نے جو مہم چلائی اور جو موقف اختیار کیا وہ ان دستاویزات کے برعکس تھا۔دستاویزات کے مطابق بن لادن کو القاعد ہ پر مکمل کنٹرول تھا۔ بن لادن نے اپنے منصوبے پھیلا دئیے تھے۔اسامہ کے کمپاو نڈ سے پندرہ لاکھ دستاویزات قبضے میں لی گئی جن میں سے دنیا کے سامنے صرف دو درجن لائی گئیں۔ امریکہ کے ہاتھ القاعدہ کی پلے بک بھی لگی تھی جس میں ان کی موجودہ کارروائیوں کی تفصیلات تھیں۔سی آئی اے نے اس پر فوری ایکشن لیا۔ ڈائریکٹر آف نیشنل جنرل انٹیلی جنس کے مطابق دستاویزات سے چار سو سے زائد رپورٹیں تیار کی گئی۔