ڈیموکریٹک پارٹی نے اوباما کو دوسری مدت کیلئے صدارتی امیدوار نامزد کر دیا

 ڈیموکریٹک پارٹی نے اوباما کو دوسری مدت کیلئے صدارتی امیدوار نامزد کر دیا

واشنگٹن (نمائندہ خصوصی) امریکہ کی ڈیموکریٹک پارٹی نے گذشتہ روز صدر بارک اوباما کو دوسری مدت کیلئے باضابطہ طور پر اپنا امیدوار نامزد کر دیا۔ شمالی کیرولینا کے شہر شارلٹ میں منعقدہ پارٹی کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے سابق صدر بل کلنٹن نے اوباما کی نامزدگی کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ میں اس بات پر مکمل یقین رکھتا ہوں کہ اس وقت صدر اوباما ہی ایک ایسی شخصیت ہیں جو امریکہ کو آگے لیجا سکتے ہیں اور معیشت کو مضبوط کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 2009ءمیں جب اوباما نے اقتدار سنبھالا تو معیشت بہت کمزور تھی لیکن چار سال کے دوران اوباما نے مضبوط معیشت کی بنیادیں رکھ دی ہیں۔ بے روزگاری کی شرح میں کمی آئی ہے سابق صدر نے ری پبلکن پارٹی کے امیدوار مٹ رومنی کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا کہ ری پبلکنز نے اوباما کیلئے سوائے مسائل اور پریشانیوں کے کچھ نہیں چھوڑا تھا۔ انہوں نے خبردار کیا کہ مٹ رومنی کو منتخب کرنے کا نتیجہ اچھا نہیں نکلے گا اور جیتنے والے سب کچھ سمیٹ لیں گے۔ ادھر ری پبلکن مخالفین اور طاقتور اسرائیل نواز گروپوں کے شدید دباﺅ کے باعث ڈیمو کریٹس نے صدر اوباما کی ہدایت پر اپنے منشور میں ترمیم کرتے ہوئے اعلان کیا کہ مقبوضہ بیت المقدس اسرائیل کا دارالحکومت ہے اور رہے گا۔ واضح رہے کہ 2008ءمیں بھی ڈیمو کریٹس کے منشور میں یہ جملہ موجود تھا لیکن اسے حذف کر دیا گیا تھا۔ ادھر سفارتکاروں نے کہا ہے کہ ڈیمو کریٹک پارٹی کا یہ موقف اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے جن میں کہا گیا ہے کہ مقبوضہ بیت المقدس کی حتمی حیثیت کا تعین اسرائیل اور فلسطین مذاکرات کے ذریعے کریں گے۔ ڈیمو کریٹک پارٹی کے منشور میں ایک اور ترمیم کرتے ہوئے خدا کے لفظ کے استعمال کو بھی شامل کر لیا گیا۔