مقبوضہ کشمیر: تراویح کے وقت بھارتی فوجیوں کا گھروں میں گھس کر بچوں، خواتین پر تشدد، مظالم کے خلاف مظاہرے

مقبوضہ کشمیر: تراویح کے وقت بھارتی فوجیوں کا گھروں میں گھس کر بچوں، خواتین پر تشدد، مظالم کے خلاف مظاہرے

سرینگر (اے پی پی‘ کے پی آئی) مقبوضہ کشمیر میں سرینگر کے علاقے  حبہ کدل میں بھارتی فوجیوں اور پولیس اہلکاروں نے نماز تراویح کے وقت گھروںمیں گھس کر خواتین اور بچوں سمیت مکینوں کو زد وکوب کیااور گھریلو ایشیا کی توڑ پھوڑ کی۔ فوجی اور پولیس اہلکاروں نے علاقے میں کھڑی درجنوں گاڑیوں کے شیشے توڑ دیے۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق ظالمانہ کارروائی کے خلاف علاقے کے لوگوں نے زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا ۔  مظاہرین نے بھارت کے خلاف اور آزادی کے حق میں نعرے لگائے اور واقعے میں ملوث اہلکاروںکے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا۔   مقبوضہ کشمیر میں محاذ آ زادی کے سرپرست محمد اعظم انقلابی نے کہا ہے کہ کشمیریوں نے نریندر مودی کے مقبوضہ علاقے کے دورے کے موقع پر مکمل ہڑتال کر کے ایک بار پھر بھارت کو باور کرایا کہ انہیں اسکا غیر قانونی قبضہ ہرگز تسلیم نہیں اور وہ اپنی جد وجہد مقصد کے حصول تک ہر قیمت پر جاری رکھیں گے۔ حریت رہنما شبیر احمد شاہ کی صدارت میں سرینگر میں حریت رہنمائوںکے ایک اجلاس میں مقبوضہ علاقے کی تازہ ترین صورت حال اور بھارت کی کشمیر پالیسی پر غور و خوض کیا گیا۔ اجلاس میں شبیر احمد شاہ کے علاوہ نعیم احمد خان، شبیر احمد ڈار، فاروق احمد ڈار ، محمد یوسف نقاش، محمد اقبال میر اور فیاض احمد نے شرکت کی۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق اجلاس میںبھارت میںنئی حکومت کی تشکیل اور اسکی جارحانہ کشمیری پالیسی پر تفصیلی غور و خوض کیا گیا۔ مقررین نے اس موقع پر کہا کہ پنڈتوں کو واپس مقبوضہ علاقے میں لاکر علیحدہ کالونیوں میں بسانے او ر غیر کشمیریوںکو جموں میںآباد کرنے کے پیچھے بھارت کے مذموم عزائم کار فرما ہیں۔  ترال میں شہید نوجوان کو سپردخاک کر دیا گیا‘ نماز جنازہ میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ مشتعل مظاہرین نے 2 پولیس گاڑیوں کو نذر آتش کر دیا۔ مظاہرین پر فائرنگ‘ نماز جنازہ کے موقع پر اسلام اور آزادی کے حق میں فلک شگاف نعرے لگائے  گئے۔ سابق چیف جسٹس مفتی بہائو الدین فاروقی کو سری نگر میں سپردخاک کر دیا گیا۔ علی گیلانی‘ میرواعظ‘ شبیر احمد شاہ اور دوسرے رہنمائوں نے اظہار افسوس کیا ہے۔