فوٹوگرافر کو تھپڑ مارنے پر شاہ سلمان نے شاہی امور کے سربراہ محمد الطبیشی کو برطرف کردیا

فوٹوگرافر کو تھپڑ مارنے پر شاہ سلمان نے شاہی امور کے سربراہ محمد الطبیشی کو برطرف کردیا

ریاض (صباح نیوز+ اے ایف پی) خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے ایک خصوصی فرمان کے تحت شاہی امور کے سربراہ محمد الطبیشی کو ان کے عہدے سے ہٹا دیا ہے اور ان کی جگہ خالد العباد کو شاہی امور کا نیا نگران مقرر کیا گیا ہے۔ عرب ٹی وی کے مطابق محمد الطبیشی کو حال ہی میں مراکشی فرمانروا شاہ محمد ششم کے دورہ سعودی عرب کے موقع پر ایک فوٹوگرافر کے ساتھ مبینہ بدسلوکی اور اسے تھپڑ مارنے کی بنا پر عہدے سے ہٹایا گیا ہے۔ ان کی جگہ خالد العباد کو شاہی امور کا نیا انچارج مقرر کیا گیا ہے۔ بی بی سی کے مطابق کچھ روز قبل شاہ سلمان کے معاون کو ویڈیو میں ایک فوٹو جرنلسٹ کو تھپڑ مارتے ہوئے دکھایا گیا تھا۔ سرکاری نیوز ایجنسی ایس پی اے میں شائع ہونے والے ایک حکم نامے میں شاہی پروٹوکول کے سربراہ محمد الطوبیشی کو برطرف کرنے کا کوئی جواز نہیں بتایا گیا۔ البتہ ٹی وی فوٹیج میں دیکھا جاسکتا ہے کہ جب اتوار کو شاہ سلمان مراکش کے شاہ محمد کا ریاض کے ہوائی اڈے پر استقبال کررہے تھے تو اس وقت محمد الطبیشی نے ایک فوٹوگرافر کو تھپڑ مارا تھا۔ سعودی شہریوں نے سوشل میڈیا نیٹ ورکس پر شاہ کے اس فیصلے کا خیرمقدم کیا ہے۔ شاہ سلمان نے اپریل کے اوائل میں وزیر صحت احمد الخطیب کو بھی اس وقت تبدیل کردیا تھا جب انہوں نے ایک شخص سے تلخ کلامی کی جو ریاض کے ایک ہسپتال کی حالت بتانے ان کے پاس گیا تھا۔