فرانسیسی خفیہ ادارے بھی ٹیلی فون اور کمپیوٹر ڈیٹا کی جاسوسی میں ملوث نکلے

 فرانسیسی خفیہ ادارے بھی ٹیلی فون اور کمپیوٹر ڈیٹا کی جاسوسی میں ملوث نکلے

پیرس (اے پی پی) فرانسیسی اخبار نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکہ کی طرح فرانسیسی خفیہ ادارے بھی ٹیلی فون اور کمپیوٹر ڈیٹا کی جاسوسی میں ملوث ہیں۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق فرانسیسی اخبار ”ہلے موند“ نے ایک رپورٹ میں دعویٰ کرتے ہوئے کہا ہے کہ فرانس کے خفیہ اداروں کا ڈی جی ایس ای نظام فرانس سے خارج ہونے والے تمام الیکٹرومیگینٹک سگنل جمع کرتا ہے اور ساتھ ہی فرانس اور دیگر ممالک کے درمیان کیمونیکیشن ڈیٹا بھی محفوظ کرلیتا ہے اخبار کا دعویٰ ہے کہ ہماری تمام کیمونیکیشن کی جاسسوسی ہو رہی ہے۔ دعویٰ کے مطابق ٹیلی فون پر کی جانے والی بات چیت ۔ ای میلز ‘ ایس ایم ایس ‘ فیس بک اور ٹوئیٹر پر موجود مواد ”کئی برسوں “ تک سُپر کمپیوٹر پر محفوظ رہتا ہے جسے دیگر سیکورٹی ادارے بھی دیکھ سکتے ہیں ۔ دوسری جانب فرانسیسی پارلیمانی رکن ژان ژاک کا کہنا ہے کہ اخباری رپورٹ حقیقت کے قریب نہیں ہے ان کا کہنا ہے کہ فرانسیسی عوام کی کیمونیکیشن ایک قانون کے تحت جمع کی جانے کے بعد فوراً تلف کردی جاتی ہے ۔
جاسوسی