ایران خلیجی ممالک کیلئے خطرہ نہیں‘ امریکہ نفسیاتی جنگ لڑ رہا ہے : وزارت خارجہ

تہران (اے پی پی) ایران نے امریکہ پر الزام عائد کیا ہے کہ اس نے ایران کو خلیجی ممالک کے لئے ایک بڑے خطر ے کے طور پر پیش کرکے ایران کے خلاف نفسیاتی جنگ شروع کر رکھی ہے۔ گذشتہ روز ایرانی حکومت کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکہ خلیجی عرب ممالک کو اس بات پر قائل کرنے کی کوشش کر رہا ہے کہ انہیں ایران کے خلاف امریکہ کے تحفظ کی ضرورت ہے۔ ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ امریکہ مشرق وسطیٰ میں ایران کے خلاف منفی پروپیگنڈے میں مصروف ہے اور ایران کو ایک انتہائی خطرناک ملک کے طور پر پیش کرنے کی کوششیں کر رہا ہے۔ ترجمان نے کہا کہ ایران کے اپنے پڑوسی ممالک کے ساتھ دوستانہ تعلقات قائم ہیں اور ایران اپنے خطے کے ممالک کے ساتھ تعلقات کو مزید فروغ دینے کا خواہاں ہے اور وہ خطے میں امن چاہتا ہے۔ دریں اثناء ایران کے سینئر فوجی عہدیدار جنرل حسن فیروز عابدی نے خلیجی ممالک کو یقین دلایا ہے کہ ایران ان کے لئے کوئی خطرہ نہیں ہے اور وہ ایران کے خلاف امریکہ کے غیر موثر میزائل دفاعی نظام کی خریداری پر بھاری رقوم خرچ کرنے سے اجتناب کریں۔ایرانی مسلح افواج کے جوائنٹ چیفس آف سٹاف نے خلیجی ممالک کو پیٹریاٹ میزائل کی فروخت کے امریکی منصوبے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران ایک امن پسند ملک ہے اور وہ خطے کے کسی بھی ملک کے خلاف جارحانہ عزائم نہیں رکھتا۔انہوں نے کہا کہ امریکی میزائل غیر موثر ہے اور اس پر رقوم خرچ کرنے کا کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔ قبل ازیں ایران کے ایٹمی توانائی کے ادارے کے سربراہ علی اکبر صالحی نے کہا ہے کہ یورینیم کی افزودگی سے متعلق عالمی طاقتوں کے ساتھ ابھی تک کوئی سمجھوتہ طے نہیں پایا۔
ایران