’’ میری زندگی کے قیمتی 18 برس بھارتی جیلوں کے اندر ضائع کیے گئے‘‘

سرینگر(اے پی پی) ایک جھوٹے مقدمے میں اپنی زندگی کے 18برس بھارتی جیلوںمیںگزارنے والے مقبوضہ کشمیر کے ضلع اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے فاروق احمد خان نامی نوجوان نے استفسار کیا  ہے کہ اسکی زندگی کے قیمتی اٹھارہ برس جو جیلوں کے اندر ضائع کیے گئے اسکا جواب وہ کس سے لے گا۔فاروق احمد کو دو دہائیوںتک جاری رہنے والی عدالتی پیشیوںکے بعد بیگناہ قرار د یکر رہا کیاگیا ہے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے محکمہ آب رسانی کے انجینئرفاروق احمد خان نے سرینگر میں میڈیا کے نمائندوں کو اپنی روداد سناتے ہوئے کہااسے    1996میں نئی دہلی سے مقبوضہ کشمیر ایک فون کال کرنے کی بنا پر گرفتار کیاگیاتھااور اب دو دہائیوں کے بعد اسے بیگناہ قرار دیا گیا ہے۔ انہوںنے کہا کہ وہ  واحدکشمیری نہیں ہے جس کو یہ مصائب جھیلنا پڑے بلکہ ایسے بہت سے کشمیری ہیں جنہیں اس سے بھی زیادہ مصائب جھیلنا پڑے ۔