اسلام کسی بھی قسم کی دہشتتگردی کی اجازت نہیں دیتا،زمین پرشرپھیلانے والوں کےلیےسخت سزائیں ہیں. مفتی اعظم شیخ عبدالعزیز بن عبداللہ

اسلام کسی بھی قسم کی دہشتتگردی کی اجازت نہیں دیتا،زمین پرشرپھیلانے والوں کےلیےسخت سزائیں ہیں. مفتی اعظم شیخ عبدالعزیز بن عبداللہ

مسجد نمرہ میں خطبہ حج دیتےہوئے مفتی اعظم نے کہا کہ اللہ تعالیٰ پر ایمان لانا ہی کامیابی کی دلیل ہے۔ دنیا کا کوئی بھی مسئلہ ایسا نہیں جس کا حل اسلام میں موجود نہیں،قرآن اور سنت نبوی پر عمل ہی مسلمانوں کی فلاح کا ضامن ہے۔ انسان کو عبادت کرنی چاہئیے اوربہتر حسن سلوک کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔ شیخ عبدالعزیز بن عبداللہ نے کہا کہ اللہ تعالیٰ مسلمان کی معمولی نیکی کا بھی قیامت کے دن صلہ دے گا۔ ہمیں کامیاب زندگی گزارنے کے لئےنبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی حیات طیبہ کومشعل راہ بنانا چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ قرآن واحد کتاب ہے جو اپنے اصل متن کے ساتھ ہے۔ قرآن کریم تمام جہانوں کیلئے ہدایت کا سرچشمہ ہے۔انہوں نے کہا کہ اسلام مسلمانوں کو برے کام سے روکتاہے۔ مسلمانوں کو چاہیے کہ وہ دوسرے مذاہب کے حقوق کا احترام کریں ۔ مسلمان معاشرہ اپنی خصوصیات کی وجہ سے دوسرے معاشروں سے ممتاز ہے۔ مفتی نے کہا کہ مسلمانوں متحد نہ ہوئے تو دشمن غالب آجائے گا ،جو اللہ کے احکامات کے مطابق زندگی نہیں گزارتاوہ خسارے میں رہے گا، مسلم حکمرانوں کو جرائم اورغربت پر قابو پانے کے لئے اقدامات کرنے چاہیئں جبکہ سیاستدان امت مسلمہ اوراپنی قوم کے وسیع تر مفادات کے لئے آپس میں تعاون بڑھائیں۔انہوں نے کہا کہ اسلامی تعلیمات رائج کرنے سے ہی تمام مسائل سے چھٹکارا ممکن ہے۔مفتی اعظم کا کہنا تھا کہ زمین پرانسان کا خون بہانا اللہ کے نزدیک سب سے ناپسندیدہ عمل ہے،مسلمان مسلمان کا بھائی ہے اور اس کے دکھ سکھ کا ساتھی ہے،انہوں نے کہا کہ عالم اسلام اس وقت انتشار کا شکار ہے،علمائے کرام کی بھاری ذمہ داری ہے کہ وہ امت اسلام کی اصلاح کے لئے انتھک محنت کریںاور برائیوں کا قلع قمع کرنے میں اہم کردارادا کریں۔ انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کےعقائد بگاڑنے میں اسلام دشمن میڈیا جنگ میں مصروف ہیں،فحاشی اور عریانی عروج پر ہے، مسلمان ممالک کے چینلز تعمیری کردار ادا کریں۔شیخ عبد العزیز نے کہا کہ کاروباری افراد معاشرے کو سود سے پاک کرنے کیلئے کردارادا کریں، تاجر مہنگائی اور گرانی کیخلاف کام کریں ۔اتحاد بین المسلین ہی اسلا م دشمنوں سے مقابلے کا واحد ہتھیار ہے،خطبے کے آخرمیں مفتی اعظم نے خصوصی دعا بھی کروائی