ہلمند: افغان پولیس اہلکار کی فائرنگ سے 5 برطانوی فوجی ہلاک

کابل (ریڈیو نیوز + ایجنسیاں + اے ایف پی) افغانستان میں پولیس اہلکار کی فائرنگ سے 5 برطانوی فوجی اہلکار ہلاک ہو گئے۔ برطانوی وزارت دفاع کے مطابق واقعہ صوبہ ہلمند کے ضلع ناد علی کی چیک پوسٹ پر پیش آیا جب ایک افغان پولیس اہلکار نے برطانوی فوجیوں پر مبینہ طور پر بلا اشتعال فائرنگ کر دی۔ اپنے بیان میں وزارت دفاع نے کہا کہ ہلاک ہونے والے تین فوجیوں کا تعلق گرینڈرز گارڈز سے اور دو کا رائل ملٹری پولیس سے تھا۔ یہ فوجی گزشتہ روز ضلع ناد علی میں ایک چیک پوائنٹ پر افغان پولیس اہلکار کی گولیوں کا نشانہ بنے۔ فوجیوں کے لواحقین کو ان کی ہلاکت کے بارے میں مطلع کر دیا گیا ہے۔ ٹاسک فورس ہلمند کے ترجمان ڈیوڈ ویلفیلڈ نے کہا کہ پانچوں برطانوی فوجی فرائض کی ادائیگی کے دوران ہلاک ہوئے خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ حملہ آور گلبدین نامی ایک پولیس اہلکار تھا جو فائرنگ کے بعد موقع سے فرار ہو گیا۔ قبائلی ذرائع اس کا طالبان سے تعلق بتاتے ہیں۔ ادھر قندھار کے ضلع ژری دشت میں طالبان اور افغان فورسز کے درمیان کئی گھنٹے تک خونریز لڑائی ہوئی ہے جس میں 3 طالبان سمیت 5 اہلکار ہلاک ہوئے ہیں۔ اے ایف پی کے مطابق برطانوی وزیراعظم گورڈن براﺅن نے کہا ہے کہ طالبان نے پانچوں برطانوی فوجیوں کی ہلاکت کی ذمہ داری قبول کی ہے 5 فوجی شدید زخمی بھی ہیں۔ انہوں نے واقعہ پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ افغانستان کے صدر حامد کرزئی نے پانچ برطانوی فوجیوں کی ہلاکت کی تحقیقات کیلئے وزارت داخلہ کے حکام کو ہدایات جاری کر دیں علاوہ ازیں نیٹو کے سیکرٹری جنرل نے واقعہ پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔