پاکستان اور امریکہ اتحادی نہیں، محض دکھاوا کر رہے ہیں: حسین حقانی

پاکستان اور امریکہ اتحادی نہیں، محض دکھاوا کر رہے ہیں: حسین حقانی

واشنگٹن (اے پی اے) امریکہ میں پاکستان کے سابق سفیر اور میمو گیٹ کے مرکزی کردار حسین حقانی کی پاکستان مخالف تند و تیز بیان بازی نہ رک سکی۔ حسین حقانی نے امریکی جریدے نیوز ویک کو ایک انٹرویو دیتے ہوئے کہا  پاکستان اور امریکہ اتحادی نہیں، یہ دونوں ممالک اتحادی ہونے کا محض دکھاوا کر رہے ہیں، پاکستان امریکہ قربت کا ہر دور دونوں اطراف سے ازالہ سحرکی پیروی کے نتیجے میں عمل پذیر ہوا۔ انہوں نے کہا  ایبٹ آباد آپریشن، سلالہ چیک پوسٹ حملے اور اس طرح کے حالیہ رونما واقعات کے باعث اس بار پاکستان اور امریکہ میں عدم اعتماد اور ازالہ سحر ماضی کی نسبت بہت گہرا ہو چکا ہے۔ 2014ء اہم سال ہے اس میں پاکستان امریکہ طویل مدتی تعلقات طے پا سکتے ہیں لیکن تب ہی ممکن ہے اگر پاکستان کی بنیادی پالیسی صحیح سمت کا تعین کر سکے۔ خطے میں امریکہ کو کئی متبادل دستیاب ہیں اور ان میں پاکستان کے مستقبل میں امریکہ کے اتحادی ہونے کے امکانات بھی معدوم ہیں، اس وقت امریکہ کی ترجیحات بدل چکی ہیں اور اس کے مفاد کچھ اور ہیں۔ پاکستان کی خارجہ پالیسی سکیورٹی خطرے کی بنیاد پر مشتمل ہے۔ نیوکلیئر ٹیکنالوجی حصول کے بعد پاکستان کو تحفظ کا احساس ہونا چاہئے تاہم اس کے باوجود پاکستان کا رویہ ایسا ہے جیسے کوئی شخص اپنے اور اپنی فیملی کے تحفظ کے لئے ہتھیار خریدتا ہے اور پھر تمام رات اس سوچ میں جاگتے ہوئے گزار دیتا ہے کہ کہیں کوئی اس کے ہتھیار نہ چرا لے۔ ہمیں کسی صورت بھی 17دسمبر 1971کے دن کو فراموش نہیں کرنا چاہئے۔ اس روز ہمارے ہزاروں فوجیوں نے سرنڈر کر دیا لیکن ملکی اخبارات میں دکھایا گیا کہ ہمیں عظیم فتح نصیب ہوئی۔