کشیدگی کا دور ختم ہو چکا‘ ایک ارب انسانوں کو ہمیشہ تناﺅ میں نہیں رکھا جا سکتا: منموہن سنگھ

کشیدگی کا دور ختم ہو چکا‘ ایک ارب انسانوں کو ہمیشہ تناﺅ میں نہیں رکھا جا سکتا: منموہن سنگھ

نئی دہلی (آن لائن)بھارتی وزیر اعظم منموہن سنگھ نے پاکستان کے ساتھ جامع مذاکرات کی بحالی کے لئے کنٹرول لائن پر امن کو لازمی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ کشیدگی کا دور ختم ہو چکا ہے۔ ایک ارب لوگوں کو ہمیشہ تناﺅ میں نہیں رکھا جا سکتا۔دونوں ممالک کے عوام ایک دوسرے کے قریب آنا چاہتے ہیں۔ دہشت گردی نے بنیادوں کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق دورہ امریکہ سے واپسی پر ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے بھارتی وزیر اعظم منموہن سنگھ نے کہا کہ امریکہ میں پاکستانی ہم منصب کو ملاقات کے دوران اس بات سے آگاہ کیا گیا ہے کہ ہم نے جنوبی ایشیا کو کچھ دینا ہے تو پہلی ترجیح امن کو ہونی چاہیے۔ دہشت گردی نے دونوں ملکوں کی بنیادوں کو ہلا کر رکھ دیا ہے اور ہم پاکستان سے امید کریں گے کہ وہ عسکریت پسندی کے ڈھانچے کو ختم کرنے کے ساتھ ساتھ سیز فائر معاہدے پر بھی عملدرآمد کرنے میں تعاون کریگا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی ہم منصب کے ساتھ بات چیت میں اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ لائن آف کنٹرول پر امن قائم ہونا چاہئے جس سے تعلقات بہتر ہوں گے۔ تعلقات کو قائم کرنا وقت کی اہم ضرور ہے اور مذاکرات کی سیڑھی کنٹرول لائن سے ہو کر گزرے گی۔ جب سرحدیں خاموش ہوں گی تو حکومتوں کو دوسرے کے مسائل کی جانب سے توجہ مبذول کرنے کا موقع فراہم کریگا۔ نواز شریف کے ساتھ میٹنگ کے دوران ڈائریکٹر ملٹری آپریشنز کے درمیان میٹنگ کرنے پر اتفاق رائے قائم کیا گیا ہے اور دونوں کمانڈروں کے درمیان جو فیصلہ ہوگا اس پر پاک بھارت انتظامیہ دستخط کریگی اور ان پر عملدرآمد کرنے کے لئے اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ وزیر اعظم منموہن نے کہا کہ راتوں رات تو امن قائم نہیں ہو سکتا اور نہ ہی بات چیت شروع ہو سکتی ہے اس کے لئے ماحول ساز گار ہونا چاہئے اور ہم پڑوسی ملک کے ساتھ زیادہ دیر تک کشیدگی اور تناﺅ کے ماحول کو قائم رکھ سکتے ہیں۔