مقبوضہ کشمیر میں طالبان کشمیر نامی کوئی تنظیم نہیں، بھارتی ایجنسیوں کا شوشہ ہے: صلاح الدین

سرینگر (آن لائن) چیئرمین متحدہ جہاد کونسل اور حزب المجاہدین کے سپریم کمانڈر سید صلاح الدین نے مقبوضہ کشمیر میں مجاہدین کی لیڈر شپ کے خاتمے کے بارے میں بھارتی فوج کے دعوے کو من گھڑت اور خراب ذہنی اختراع قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ایسا ہے تو سات لاکھ فوج ریاست میں کیا کررہی ہے ۔طالبان کشمیر نامی تنظیم کا کوئی وجود نہیں ۔بھارتی ایجنسیوں کی کارستانی ہے۔میڈیا رپورٹ کے مطابق ایک انٹرویو کے دوران سید صلاح الدین نے کہا کہ سابق بھارتی آرمی چیف کے انکشافات کوئی نئی بات نہیں یہ ایک حقیقت ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی فوج گزشتہ 25 سالہ  تحریک کے سامنے ہار چکی ہے اور اب وہ اپنی ناکامی چھپانے کے لئے اس طرح کے الزامات لگا رہی ہے۔ نیویارک میں پاکستان، بھارت وزرائے اعظم ملاقات کو رسمی قرار دیتے ہوئے سید صلاح الدین نے کہا کہ بھارتی وزیر اعظم منموہن سنگھ کا یہ بیان کہ پاکستان دہشت گردی کا مرکز ہے اور کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کی قرار دادیں فرسودہ ہو چکی ہیں اور ایک جھوٹ ہے۔ ریاست جموں و کشمیر میں طالبان کشمیر نامی عسکری تنظیم کے وجود کو بھارتی ایجنسیوں کی کارستانی قرار دیتے ہوئے حزب سپریم کمانڈر نے بتایا میں یقین کے ساتھ کہتا ہوں کہ ریاست میں طالبان کا کوئی وجود نہیں ہے بلکہ یہ موجودہ جدوجہد کو سبوتاژ کرنے اور اسے غلط رنگت دینے کی ایک دانستہ کوشش ہے۔