طالبان دھمکیاں دے رہے ہیں کہیں میرا حال بھی ملالہ جیسا نہ ہو: افغان طالبہ

کابل (بی بی سی) افغانستان سے تعلق رکھنے والی مریم ان دنوں بھارت میں فیشن ڈیزائننگ سیکھ رہی ہیں۔ ان کا یہ پیشہ ورانہ کورس تین ماہ پر محیط ہے اور جلد ہی مریم اپنا کورس مکمل کرنے والی ہیں۔ مریم کو جہاں اپنے کورس مکمل کرکے گھر لوٹنے کی خوشی ہے وہیں انہیں ایک خوف بھی ہے۔ انہیں اپنے ملک میں واپسی پر طالبان کا خوف ہے۔ بی بی سی سے بات چیت کے دوران انہوں نے اپنے خدشات ظاہر کرتے ہوئے بتایا کہ طالبان ان کے اہل خانہ کو دھمکیاں دے رہے ہیں۔ مریم نے کہا ’میرے بھارت آنے کے بارے میں میرے اہل خانہ کے علاوہ اور کوئی نہیں جانتا تھا۔ نہ جانے طالبان کو میری بھارت آمد کا کس طرح علم ہو گیا اور اب وہ میرے گھر والوں کو دھمکیاں دے رہے ہیں۔ طالبان کہتے ہیں کہ اگر واپس نہیں گئی تو وہ میرے بھائیوں کے ساتھ برا سلوک کریں گے۔ وہ اس بات پر نالاں ہیں کہ میرے اہل خانہ نے مجھے بھارت آنے کی اجازت کیوں دی ہے اور میرا خاندان مجھے پڑھنے کی اجازت کیوں دے رہا ہے؟ مریم نے کہا میں اس بات سے بہت خوفزدہ ہوں۔ مجھے طالبان کی دھمکیوں سے ڈر لگتا ہے۔ مجھے خدشہ ہے کہ جو سلوک ان لوگوں نے ملالہ یوسف زئی کے ساتھ کیا تھا کہیں میرے ساتھ بھی کچھ ویسا ہی نہ کر گزریں۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس خوف کی وجہ سے بھارت میں تو نہیں رہ سکتیں آخر مجھے گھر تو واپس جانا ہی ہے۔