سعودی وزارت انصاف نے پاکستان انٹرنیشنل سکول عزیزیہ کا کمپیوٹر بلاک کر دیا، 10 ہزار جرمانہ ادا کرنا پڑیگا

جدہ ( امیر محمد خان سے ) سعودی عرب کی وزارت انصاف نے پاکستان انٹرنیشنل سکول عزیزیہ کا وزارت محنت میں تمام معاملات روکنے کے لئے کمپیوٹر بلاک کردیا ہے ، وزارت انصاف کی عدالت نے یہ حکم سعودی عرب کی اعلی عدالت کی جانب اساتذہ کو ملازمتوںپر فوری بحال کرنے کے حکم کو نہ ماننے کی بناء پر کیاگیا ہے ، واضح رہے کہ سکول کے 6 اساتذہ بشمول سکول پرنسپل راجہ اقبال کو سکول میں قائم والدین کمیٹی نے بغیر کسی وجہ کے برطرف کردیا تھا جنکا معاملہ عدالت میں تھا ، اعلی عدالت نے فیصلہ صادر کیا کہ راجہ اقبال کو بہ حقیقت پرنسپل اور دیگر برطر ف اساتذہ کو انکے حقوق کے ہمراہ ملازمتوں پر بحال کی جائے نیز اس سلسلے میں سفیر پاکستان اور پاکستان قونصلیٹ نے بھی سکول کی انتظامیہ سے کہا تھا معزز عدالت کے حکم کو نافذ کیاجائے مگر سکول کی کمیٹی نے حکم ماننے سے انکار کرتے ہوئے انہیں ملازمتوں پر بحال نہ کیا بلکہ برطر ف پرنسپل کی اہلیہ کو بھی برطرف کردیا سکول کا کمپیوٹر بند ہونیکی وجہ سے اسکول کو جرمانے کے طور پر اساتذہ کی بحالی تک دس ہزار ریال ادا کرنا پڑے گا نیز سکول اسٹاف نہ ہی چھٹی جاسکے اور نہ ہی انکے اقامے تجدید ہوسکیں گے ۔ جو ایک سنگین صورتحال ہے پاکستان کمیونٹی نے مطالبہ کیا ہے کہ سفیر پاکستان کمیٹی کو فوری برطر ف کریں جو سکول کی بدنامی اور والدین کیلئے مشکلات کا سبب بن رہی ہے ۔واضح رہے کہ سکول میں دس ہزار سے زائد پاکستانی طلباء اور طالبات تعلیم حاصل کررہے ہیں ، اساتذہ کو بحال کرنے کے بجائے بورڈ سکول کی فیسوں سے کئی ہزار ریال وکلاء کا ادا کرچکا ہے اب دس ہزار ریال روزآنہ جرمانہ بھی سکول فنڈ سے ادا کیا جائیگا۔ یہ روزانہ اسوقت تک ادا ہوگا جب تک عدالت کے حکم پر عمل درآمد نہیں ہوتا ۔