ہر محاذ پر ناجائز بھارتی قبضے کیخلاف جدوجہد جاری رہیگی: علی گیلانی

سری نگر(کے پی آئی ) حریت کانفرنس (گ) کے چیئرمین علی گیلانی نے کہا ہے کہ ہم ایک قوم کی حیثیت سے کبھی اور کسی بھی صورت میں سرنڈر نہیں کرینگے، بلکہ حصولِ حق خودارادیت کے ذریعے آزادی کو حاصل کرنے کی جدوجہدجاری رکھیں گے۔3 ترال کے دورے کے دوران خانقاہ فیض پناہ اور ڈاڈہ سرہ میں عوامی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے انہوںنے آستانہ قازقستان میں او آئی سی کی طرف سے پاس شدہ قرارداد کہ جموں کشمیر کے لوگوں کو اپنے پیدائشی حق، حقِ خودارادیت کے استعمال کا موقع فراہم کیا جانا چاہیے، کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ 57 مسلمان ممالک کو عملی طور اپنے تمام ذرائع ووسائل اور اثرورسوخ استعمال میں لاکر بھارت کو مسئلہ کشمیر حل کرنے پر مجبور کرنا چاہیے۔ ا±ن کا کہنا تھا کہ او آئی سی کے ساتھ کشمیریوں کا انسانیت اور مذہبی رشتہ ہے لہٰذا وہ کشمیر مسئلہ حل کرانے میں اپنا کردار ادا کریں۔ گیلانی نے منموہن سنگھ کے ا±س بیان ”کہ کشمیر کو اپنے حال پر چھوڑ دیا جائے“ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بھارت یہاں بڑے پیمانے پر قتل و غارت گری چاہتا ہے اور اسی لئے یہ بیان دیا گیا۔ بھارت نواز جماعتیں مزاحمتی تحریک کو کمزور کرنے کی کوششیں کر رہی ہیں۔ 65لاکھ کنال اراضی پر فوجی قبضہ ہے اور اگر یہ سلسلہ جاری رہا تو کشمیریوںکیلئے قبرستان کیلئے جگہ ملنا بھی مشکل ہوجائے گی۔ ایک محاذ پر ہمیں بھارت کے ناجائز فوجی قبضہ اور تسلط کے خلاف لڑنا ہے اور جب تک بھارت کا ایک بھی فوجی یہاں ہوگا ہمیں چین سے نہیں بیٹھنا ہے،دوسرے محاذ پر ہمیں بھارت کی تہذیبی جارحیت کے خلاف جنگ جاری رکھنی ہے جس کے تحت بھارت ہمیں اخلاقی دیوالیہ پن کا شکار بنانا چاہتا ہے۔
علی گیلانی