پاکستان حقانی گروپ کیخلاف آپریشن نہیں چاہتا، یہ امریکہ کیلئے سنگین چیلنج ہے: رابرٹ مینڈیز

 واشنگٹن(اے پی اے ) امریکی سینٹ خارجہ تعلقات کمیٹی کے چیئرمین نے ایک بار پھر پاکستان پر الزام تراشی کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان حقانی نیٹ ورک کیخلاف فیصلہ کن آپریشن کے حق میں نہیں پاکستان کے قبائلی علاقوں میں دہشتگردوں کے محفوظ ٹھکانے ہیں۔ اسلام آباد کا حقانی نیٹ ورک کے خلاف آپریشن کے حوالے سے فیصلہ خطے میں امریکہ کیلئے سنگین چیلنج ہے۔ رابرٹ مینڈیز نے کمیٹی کو بتایا کہ حالیہ دورہ پاکستان کے موقع پر انہوں نے پاکستانی حکام کے ساتھ ملاقاتوں میں حقانی نیٹ ورک کا ایشو اٹھایا جبکہ قبائلی علاقوں میں دہشتگردوں کے محفوظ ٹھکانوں سے نمٹنے کے طریقے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ یقیناً یہ دونوں ایشوز خطے میں امریکہ کیلئے سنگین چیلنج ہیں۔ ہمیں پاکستانی اور افغان اتحادیوں پر یہ واضح کرنا ہوگا کہ امریکہ افغانستان سے انخلاءکے بعد بھی وہاں ذمہ داریاں پوری کرنے کیلئے پرعزم رہے گا ۔ دریں اثناءریپبلکن امریکی سینیٹر ساکشی چیایمبلیس نے کہا کہ یہ انتہائی اہم ہے کہ ہم پاکستانی عوام کے ساتھ کچھ تعلقات برقرار رکھنے کیلئے کوششیں جاری رکھیں ۔ ہمیں پاکستان کیلئے امداد بند نہیں کرنی چاہیے کیونکہ اگر ہم امداد بند کردینگے تو وہ اپنے مالی وسائل کسی اور جگہ سے پورے کر لینگے جو ہمارے لئے اچھا نہیں ہوگا۔