پاکستان‘ بھارت امن عمل پٹڑی سے اتارنے کی کوشش خطرناک ہوگی: سلمان خورشید

نئی دہلی(آن لائن) بھارتی وزیر خارجہ سلمان خورشید نے پاکستان کے ساتھ خوشگوار تعلقات کی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ دونوں پڑوسی ممالک کے درمیان عمل امن کو پٹٹری سے اتارنے کی کوشش انتہائی خطرناک ثابت ہوگی آگے بڑھنے کا راستہ صرف مذاکرات ہیں ۔ بھارتی میڈیا ذمہ داری کا مظاہرہ کرے پاکستان سے امن کی کوشش ملکی پالیسی کیخلاف نہیں ۔ ایک بھارتی جریدے کو انٹرویو دیتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہا کہ بھارت نے امن عمل کے لیے بہت محنت اور سرمایہ کاری کی ہے اور اس میں اب حقیقتاً تیزی اور نتیجہ آنا چاہیے ہم بطور قوم کسی کے ساتھ جنگ کے خواہاں نہیں ہیں اگر جنگ کے بعد ہم پاکستان سے مذاکرات کرسکتے ہیں تو یقیناً ہم اس وقت بھی پڑوسی ملک سے بات چیت کرسکتے ہیں جب حالات معمول کے مطابق آگے نہیں بڑھ رہے ہوں۔ ان کا کہنا تھا کہ واقعی امن عمل کے پٹٹری سے اترنے کا خطرہ رہے گا تاہم اگر ایسا ہوا تو یہ کسی کے مفاد میں نہیں ہوگا اس سوال پر کہ پاکستان سے بات چیت کہاں تک پہنچی ہے۔ سلمان خورشید نے کہا کہ یہ فیصلہ دونوں ملکوں کے عوام کرینگے کہ ہم کہاں کھڑے ہیں ہم نے اپنے عوام کی سلامتی کے لیے ہوش اور صبروتحمل کا مظاہرہ کیا ہے ہم بدستور تحمل کا مظاہرہ کررہے ہیں کیونکہ ہمارا یقین ہے کہ امن عمل کیلئے بہت محنت اور یقیناً کچھ حاصل بھی کیا گیا ہے ۔ لائن آف کنٹرول پر دو بھارتی فوجی اہلکاروں کو ہلاک اور ان کے سر قلم کرنے کے واقعہ کے تناظر میں میڈیا کے کردار کے بارے مےں سوال پر سلمان خورشید نے کہا کہ میڈیا کو احتیاط کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔ عوام کو یہ بات ذہن نشین کرلینی چاہیے کہ پاکستان کے ساتھ امن کی کوششیں یا اقدام ملکی پالیسی کے ہرگز خلاف نہیں ہے اور اس ضمن میں میڈیا کو ذمہ دارانہ رول ادا کرنا چاہیے ۔