سمندری طوفان ’سینڈی‘ کے نتیجے میں ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد نوے تک پہنچ ,ہےمتاثرہ علاقوں میں بحالی کا عمل جاری

سمندری طوفان ’سینڈی‘ کے نتیجے میں ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد نوے تک پہنچ ,ہےمتاثرہ علاقوں میں بحالی کا عمل جاری

امریکہ میں سینڈی طوفان گزرنے کے بعد بحالی کا عمل جاری ہے تاہم اب بھی بارہ ریاستوں میں پینتالیس لاکھ افراد بجلی سے محروم ہیں امدادی کارکن متاثرہ علاقوں خصوصاً جزیرہ سٹیٹن میں گھر گھر تلاشی کا عمل جاری رکھے ہوئے ہیں۔نیویارک کے اس جنوب مغربی علاقے سے کم از کم پندرہ لاشیں مل چکی ہیں۔جزیرہ سٹیٹن کے نشیبی علاقہ ہونے کی وجہ سے یہاں سمندری پانی کے خاصی تباہی مچائی ہے اور مکان اپنی بنیادوں سے اکھڑ گئے ہیں۔تازہ اندازوں کے مطابق اس طوفان کے نتیجے میں ہونے والی تباہی اور پھر اس کے ازالے کا تخمینہ پچاس ارب ڈالر کے لگ بھگ لگایا گیا ہےنیویارک شہر اور ریاست نیوجرسی میں اب بھی متعدد پیٹرول پمپ بند ہیں اور جو پمپ کام کر رہے ہیں وہاں شہریوں کی طویل قطاریں دیکھی گئی ہیںنیویارک میں سڑکوں پر رش کم کرنے کے لیے مسافر ٹرینوں، سب ویز اور بسوں پر عارضی طور پر مفت سفر کی سہولت فراہم کی گئی ہے جبکہ مین ہٹن میں فی الحال صرف ایسی گاڑیوں کو داخلے کی اجازت ہے جن میں تین یا اس سے زیادہ افراد سوار ہوں۔ریل کمپنی ایم ٹریک نے اپنی ایسٹ کوسٹ سروس آج سے بحال کرنے کا اعلان کیا ہے۔مین ہٹن کے زیریں علاقے میں جہاں چودہ فٹ اونچی سمندری لہر نے علاقے کو ڈبو دیا تھا زیرِ زمین ریل سروس تاحال بند ہے اور ہزاروں مکانات بجلی سے محروم ہیں۔امید کی جا رہی ہے کہ نیویارک کے زیادہ تر علاقوں میں ہفتے کو بجلی بحال ہو جائے گی تاہم کچھ علاقوں میں اس عمل میں کئی ہفتے لگ سکتے ہیں۔