امریکی سپریم کورٹ نے ہیڈ سکارف کے باعث نوکری سے انکار کی جانیوالی مسلمان خاتون کے حق میں فیصلہ دیدیا

امریکی سپریم کورٹ نے ہیڈ سکارف کے باعث نوکری سے انکار کی جانیوالی مسلمان خاتون کے حق میں فیصلہ دیدیا

واشنگٹن (رائٹرز) امریکی سپریم کورٹ نے ہیڈ سکارف پہننے کی وجہ سے اوکلاہاما میں کپڑوں کے سٹور کی جانب سے نوکری دینے سے انکار پر عدالت سے رجوع کرنیوالی مسلمان خاتون کے حق میں فیصلہ دیدیا۔ سپریم کورٹ کے ایک کے مقابلے میں 8 ججوں نے امریکہ کے مساوی روزگار کے مواقع کے کمشن کے حق میں فیصلہ دیا۔ امریکہ کی اس فیڈرل ایجنسی نے 2008ء میں 17 سال کی عمر میں ابرکرومبی کڈز سٹور کی جانب سے نوکری سے انکار کی جانیوالی سمانتھا ایداف کی جانب سے کیس دائر کیا تھا عدالت نے کہا کہ ایداف کو صرف یہ ظاہر کرنے کی ضرورت تھی کہ اس کی مذہبی ضرورت نے نوکری دینے والے کے فیصلے میں کردار ادا کیا۔ ایداف نے انٹرویو کے دوران سکارف پہن رکھا تھا تاہم اس نے سکارف پہننے کی سہولت کی درخواست نہیں کی تھی۔ مسلمان گروپوں نے ایداف کی حمایت میں بیان دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ میں مسلمانوں کیخلاف نوکری میں تعصب برتے جانے کے واقعات میں اضافہ ہو رہا ہے۔ کمپنی نے اس بنا پر ایداف کو نوکری سے انکار کیا تھا کہ اس کا سکارف کمپنی کی ظاہری شکل و صورت کے متعلق پالیسی کے خلاف ہے۔