مشرق وسطی ‘جنوبی ایشیا میں عزت کے نام پر سالانہ 20 ہزار خواتین قتل

 لندن(ثناء نیوز) شمالی  بھارت کی ریاست اتر پردیش کے ایک گاؤں میں دو نوجوان لڑکیوں کے ساتھ اجتماعی جنسی زیادتی کے بعد انہیں پھانسی دے کر قتل  کرنے کے واقعے نے دنیا کو ہلا کر رکھ دیا ہے ۔ غیرملکی اخبار کی رپورٹ کے مطابق اس سے واضح ہوتا ہے کہ اکیسویں صدی میں بھارت میں قدیم رسم و رواج اور رویے برقرار ہے۔ ہندو مذہب کے اصولوں کو ترجیج دیتے ہیں۔مختصر یہ کہ اگرچہ جنوبی ایشیا مستقبل کی جانب گامزن ہے پھر بھی پرتشدد قدیم روایات کو ابھی تک ختم نہیں کیا جا سکا ہے۔  بین الاقوامی غیرسرکاری تنظیموں کی رپورٹوں کے مطابق  مشرق وسطی اور جنوبی ایشیا میں عزت کے نام پر ہر سال تقریباً بیس ہزار خواتین کو قتل  کر دیا جاتا ہے۔ یوں لگتا ہے کہ یہ اندازہ حقیقت پر مبنی ہے۔