مصر : فوج پر حملے کرنے والوں کے خلاف ملٹری عدالتوں میں مقدمات چلیں گے‘ دستور ساز پینل نے منظوری دیدی

مصر : فوج پر حملے کرنے والوں کے خلاف ملٹری عدالتوں میں مقدمات  چلیں گے‘ دستور ساز پینل نے منظوری دیدی

قاہرہ  (اے پی پی‘ اے ایف پی) مصر میں معزول صدر محمد مرسی کے حامیوں نے خواتین کارکنوں کوسزائوں کے خلاف احتجاجی مظاہرے شروع کردیئے ہیں۔ 7 دسمبر کو سزائوں کے خلاف اپیلیں داخل کردی جائیں گی۔ اتوار کو میڈیا رپورٹس کے مطابق مصر میں معزول صدر محمد  مرسی کی جماعت اخوان المسلمون کی 21 خواتین کو عبوری حکومت کی عدالت نے گیارہ گیارہ سال قید کی سزا سنائی تھی۔ سزائوں کو انتقامی کارروائی قرار دیتے ہوئے مرسی کے ہزاروں حامیوں نے ملک بھر میں احتجاج شروع کر دیا ہے۔ سکندریہ میں  مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے درمیان جھڑپ میں 5 کارکن زخمی ہوگئے ہیں۔ ہزاروں کارکنوں نے عبوری حکومت کے خاتمے اور محمد مرسی کو رہا کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ ادھر مظاہروں کے الزام میں گرفتار سیکولر رہنما احمدد مہر کو رہا کر دیاگیا اور عبدالفتح کی حراست میں 15 روز توسیع کر دی گئی۔ دستور ساز پینل نے فوجیوں پر حملے کرنے والوں کے خلاف فوجی عدالتوں میں کارروائی کی منظوری دیدی۔ ادھر پارلیمنٹ میں آئینی مسودے پر بحث کے دوران ارکان نے  پارلیمانی الیکشن صدارتی الیکشن سے قبل کرانے کا آرٹیکل مسترد کر دیا۔ آئینی مسودے پر آئندہ ماہ ریفرنڈم ہوگا۔ 247 میں سے 4 آرٹیکل پارلیمنٹ نے مسترد کر دیئے۔ منظوری نہیں دی۔ عدالت نے اخوان المسلمون کے ٹی وی چینل کے سربراہ کو گرفتار کر لیا گیا۔ مسودے میں فوج کو زیادہ اختیارات دینے کا کہا گیا ہے۔ 50 رکنی پینل نے جس متنازعہ شق کی منظوری دی ہے‘ اس کے مطابق فوج اور ملٹری تنصیبات پر حملے کرنے والوں کے خلاف کارروائی ہوگی اور دیگر ملزموں کے خلاف فوجی جج مقدمات نہیں سنیں گے۔ 247 میں سے 130 شقوں کی منظوری دی گئی۔