مصر: مشتعل مظاہرین نے صدر مرسی کو مسجد میں محصور کر دیا‘ قاہرہ میں احتجاج جاری

مصر: مشتعل مظاہرین نے صدر مرسی کو مسجد میں محصور کر دیا‘ قاہرہ میں احتجاج جاری

  قاہرہ (اے ایف پی) قاہرہ میں گزشتہ روز مشتعل مظاہرین نے صدر مرسی کو نماز جمعہ کے بعد مسجد میں محصور کر دیا جبکہ التحریر سکوائر میں ہزاروں افراد نے احتجاج جاری رکھا۔ مظاہرین ٹولیوں کی شکل میں آزادی چوک پہنچتے رہے۔ اپوزیشن نے مرسی پر دباﺅ بڑھا دیا ہے۔ مصر کی اسمبلی میں اسلام پسند چھائے ہوئے ہیں۔ گزشتہ 24 گھنٹے کے طویل اجلاس کے بعد اسمبلی نے جمعہ کی صبح مسودہ آئین کی منظوری دیدی۔ لبرل اور مسیحیوں نے اجلاس کا مکمل بائیکاٹ کیا۔ مسودہ مرتب کرنیوالے پینل کے سربراہ ہاشم ایفرانی نے کہا ہے کہ دستور ساز اسمبلی کا ایک وفد کل (ہفتہ) کے روز صدر کو آئین کا مسودہ پیش کریگا۔ توقع ہے کہ مرسی دو ہفتوں کے اندر مسودہ آئین پر ریفرنڈم کرائیں گے، مصر کے متعدد نجی اخبارات نے اعلان کیا ہے کہ وہ آئندہ منگل کو ہڑتال کریں گے اور اخبارات شائع نہیں کریں گے، صحافیوں کا کہنا ہے کہ وہ سمجھتے ہیں کہ نئے مسودہ میں پریس کی آزادی کی ضمانت نہیں دی گئی علاوہ ازیں تحفظ اظہار رائے آزادی کمیٹی کے ایک رکن عبداللہ منادی نے کہا ہے کہ نجی ٹی وی چینلز بدھ کو ہڑتال کریں گے۔