بھارتی سپریم کورٹ نے 259 پاکستانی قیدیوں کی رہائی کے مقدمے کی سماعت جنوری تک ملتوی کر دی

بھارتی سپریم کورٹ نے 259 پاکستانی قیدیوں کی رہائی کے مقدمے کی سماعت جنوری تک ملتوی کر دی

 نئی دہلی (ثناءنیوز) بھارتی سپرےم کورٹ نے بھارت کی مختلف جیلوں میں قےد 259 پاکستانی قیدیوں کی رہائی کے مقدمے کی سماعت جنوری 2013ءتک ملتوی کر دی ہے۔ جسٹس آر ایم لودھا اور جسٹس انل آر دوے پر مشتمل سپر یم کورٹ کے ڈویژن بنچ نے گزشتہ روز مختصر سماعت کے بعد ےہ فےصلہ کےا۔ بھارت کی مختلف جیلوں میں قےد 259پاکستانی قیدیوں مےں سے بیشتر مقبوضہ کشمےر حکومت کے حکم سے قےد ہیں اور کچھ 1965میں حراست میں لئے گئے پاکستانی قیدی ہیں۔سرکاری وکیل کی درخواست پر سپریم کورٹ نے اس معاملے کو جنوری 2013تک ملتوی کردیا۔سینئر وکیل پروفیسربھیم سنگھ نے سپریم کورٹ میں پیش ہوکر مطالبہ کیا کہ ان قیدیوں کے معاملے کو فاسٹ ٹرائل کورٹ میں چلایا جائے جن کی پہلے ہی مختلف عدالتوں میں سماعت ہوچکی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ جموں کشمیر حکومت نے سپریم کورٹ کے اس حکم کی خلاف ورزی کی ہے کہ غیرملکی قیدیوں کا مقدمہ ایک سال میں مکمل کردینا چاہئے۔ سپریم کورٹ نے 2007ءمیں اور پھر 2008ءمیں جموں کشمیر اور بھارتی حکومت کو ہدایت دی تھی کہ ان کے مقدمے ایک سال کے اندر پورے کئے جانے چاہئیں۔