پاک فوج سرحدی خلاف ورزی کر رہی ہے‘ افغانستان کا الزام: صرف حملوں کا جواب دیا‘ پاکستان

پاک فوج سرحدی خلاف ورزی کر رہی ہے‘ افغانستان کا الزام: صرف حملوں کا جواب دیا‘ پاکستان

کابل+ اسلام آباد (سٹاف رپورٹر+ نوائے وقت رپورٹ) افغانستان کی وزارت داخلہ کے ترجمان نے الزام لگایا ہے کہ پاکستانی فوج کی طرف سے بین الاقوامی سرحد کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔ اس معاملے پر اپنے مغربی اتحادیوں اور حکومت پاکستان کے ساتھ رابطے میں ہیں۔ ترجمان صدیق صدیقی نے کابل میں ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ افغان حکومت اس ضمن میں جو بھی فیصلہ کرے گی افغان سیکورٹی فورسز اپنی سرزمین کے دفاع کیلئے اس پر عمل درآمد کی منتظر رہیں گی۔ ادھر ترجمان پاکستان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ سرحد پار حملوں کا معاملہ ایساف اور حکومت افغانستان کے سامنے کئی مرتبہ اٹھایا ہے۔ 24 جون اور 12 جولائی کو دیر اور باجوڑ میں سرحد پار سے حملے ہوئے تھے جنہیں کامیابی سے پسپا کیا گیا۔ جوابی کارروائی صرف ان علاقوں تک محدود تھی جہاں سے دہشت گردوں نے حملہ کیا۔ ترجمان نے مزید کہا کہ پاکستان میں سرحد پار سے حملوں پر ایساف کے ساتھ سرحدی انتظام کے میکنزم کے ذریعے سرگرمی سے بات چیت جاری ہے جو باہمی احترام اور مفاد کی بنیاد پر پاکستان اور ایساف کے مابین جاری تعاون اور اشتراک کا حصہ ہے۔