افغانستان میں ترقیاتی پروگرام کے لاکھوں ڈالر خورد برد ہو گئے: امریکی رپورٹ

افغانستان میں ترقیاتی پروگرام کے لاکھوں ڈالر خورد برد ہو گئے: امریکی رپورٹ

کابل/واشنگٹن (نیوز ایجنسیاں) ایک امریکی ادارے نے انکشاف کیا ہے کہ امریکہ کے افغانستان میں جاری ترقیاتی پروگراموں میں لاکھوں ڈالر خورد برد کی وجہ سے ضائع ہورہے ہیں۔ امریکی کانگریس کو دی گئی رپورٹ کے مطابق افغانستان میں ایک دہائی کی جنگ اور 89ارب ڈالر مختص کرنے کے باوجود افغانستان کی تعمیر نو کا مقصد حاصل نہیں کیا جاسکا۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سال 2011میں افغانستان کے لیے مختص 40کروڑ ڈالر کا بیش تر حصہ منصوبہ بندی کے فقدان، ناقص پلاننگ اور غیرہنر مندی کی وجہ سے ضائع ہو سکتا ہے۔ ناقص تعمیرات اور خورد برد کی رپورٹیں ملنے کے بعد متعدد افراد کو گرفتار کیا جاچکا ہے اورامریکہ اور افغانستان میں تحقیقات بھی جاری ہیں۔ 9لاکھ ڈالر ریکور کیے جانے کے علاہ 5کروڑ ڈالر کے متعدد معاہدے بھی منسوخ کر دیے گئے ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ افغانستان میں انفراسٹرکچر کے پراجیکٹس میں بدانتظامی کے باعث لاکھوں امریکی ٹیکس دہندگان کی رقم ضائع ہونے کا ڈر ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ان پراجیکٹس کی منصوبہ بندی، رابطہ کاری اور عملدرآمد کافی کمزور تھی۔ سہ ماہی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ صرف 2011 میں بڑے پراجیکٹس کے لیے مختص کیے گئے امریکی حکومت کے چار سو ملین ڈالر ناقص منصوبہ بندی کے باعث ضائع ہونے کا خدشہ ہے۔ دریں ا ثناءافغانستان میں امریکہ کے زیر قیادت اتحادی فوج کیلئے کام کرنے والے افغان جنگجو امریکیوں سے بد زن ہوکر دوبارہ طالبان کے ساتھ ملنا شروع ہوگئے ہیں ، ایران کے پریس ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق افغانستان میں قابض فوج کیلئے کام کرنے والے افغان جنگجو جن کی تربیت پر امریکی اور اتحادیوں نے لاکھوں ڈالر خرچ کئے انہوں نے اپنی وفاداریاں تبدیل کرنا شروع کردی ہیں اور کئی جنگجووں نے طالبان کے ساتھ شمولیت اختیار کرلی ہے جس کی واضع مثال مغربی صوبے فرح کی ہے جہاں 23 افغان ملیشیا کے ارکان نے نہ صرف طالبان کے ساتھ شمولیت اختیار کی بلکہ اتحادیوں کی جانب سے ملنے والے ہتھیار بھی ان کے حوالے کردیئے اور وہ جنگجو جنہیں امریکی طالبان کے خلاف استعمال کرنے کیلئے تربیت دی تھی وہ نیٹو فوج کے خلاف برسر پیکار ہوگئے رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ امریکہ کیلئے یہ صورتحال انتہائی تشویشناک ہوتی جارہی ہے۔فغانستان میں تعینات فرانس کے فوجی دستوں کا انخلاءشروع ہو گیا۔ منگل کو فرانسیسی فوج نے خالی کر کے افغان فوج کے حوالہ کر دیا۔