وزیراعظم سیکرٹریٹ‘ پارلیمنٹ لاجز سمیت متعدد نادہندہ اداروں کی گیس‘ بجلی منقطع

اسلام آباد (خبرنگار/وقائع نگار) اسلام آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی(آئیسکو) نے 100 سے زائد نادہندہ اداروں کی بجلی کے کنکشن منقطع کر دئیے، جن اداروں کے بجلی کنکشن منقطع کئے گئے ان میں سی ڈی اے ہیڈ کوارٹر، سی ڈی اے دفتر G-6/4، سی ڈی اے فائونٹین، کرکٹ گرائونڈ G-6/1، فلم سنسر بورڈ، اینٹی نارکوٹکس دفاتر اسلام آباد، وائلڈ لائف F-6/2، ٹریفک سگنل، سٹریٹ لائٹس اسلام آباد، نیشنل ٹریننگ بیورو H-9، سکیرٹیریٹ ٹریننگ انسٹیٹیوٹ H-9، اور گو رنمنٹ کالج F-7/2، ٹی ایم اے راول ٹا ئون، پی ڈبلیو ڈی G-8/3، پی ڈبلیو ڈی جہلم، فارسٹ ریسٹ ہائوس، کلر کہار ریسٹ ہائوس شامل ہیں۔ ان نادہندہ اداروں میں سی ڈی اے کے ذمہ دو ارب سے زائد جبکہ دیگر اداروں کے ذمہ لاکھوں کے بقایاجات واجب الادا ہیں۔ مزید براں بلوں کی عدم ادائیگی پر سوئی نادرن گیس کمپنی نے وزیر اعظم سیکرٹریٹ، پارلیمنٹ لاجز اسلام آباد، فیڈرل شریعت کورٹ اور گورنر ہائوس مری کے گیس کنکشن کاٹ دیئے ہیں، ایس این جی پی ایل ذرائع کے مطابق وزیر اعظم سیکرٹریٹ 47لاکھ روپے کا نادہندہ ہے، پارلیمنٹ ہائوس کے ذمے 13لاکھ روپے کے واجبات ہیں، پارلیمنٹ لاجز اسلام آباد 7لاکھ 70ہزار فیڈرل شریعت کورٹ 2لاکھ 24ہزار اور گورنر ہائوس مری 1لاکھ 88ہزار روپے کا نادہندہ ہے، ذرائع کے مطابق ان اداروں کو متعدد نوٹسسز جاری کئے گئے مگر واجبات ادا نہ ہونے پر بالآخر گیس کنکشن کاٹنا پڑے۔ چیف ایگزیکٹو آئیسکو محمد یوسف اعوان نے کہا ہے واجبات کی ادائیگی پر ہی ان نادہندہ اداروں کی بجلی بحال کی جائیگی۔ وفاق کے بیس ادارے بجلی کے بلوں کی ادائیگی نہیں کرتے۔ وزارت پانی و بجلی اور پٹرولیم خود 40لاکھ روپے کے نادہندہ ہیں۔ پارلیمنٹ ہائوس 12کروڑ 70لاکھ روپے‘ وزیراعظم ہائوس و سیکرٹریٹ 54لاکھ ‘ سندھ اور بلوچستان ہائوس 60لاکھ روپے جبکہ وزارت پانی و بجلی 22لاکھ‘ وزارت قانون32لاکھ ‘ الیکشن کمشن تین لاکھ‘ وفاقی محتسب چھ لاکھ روپے کے نادہندہ ہیں۔ وفاقی شرعی عدالت 36 لاکھ ‘ آڈیٹر جنرل آف پاکستان پانچ لاکھ روپے اور سینیٹرز ہاسٹل 12 لاکھ روپے کا آئیسکو کا نادہندہ ہے۔