قلات سوات فائرنگ جھڑپ 3 سیکورٹی اہلکار شہید 3 دہشت گرد ہلاک

کوئٹہ+سوات +کیچ +پشاور +لاہور (نوائے وقت رپورٹ +ایجنسیاں+نامہ نگار) بلوچستان کے علاقے قلات میں پولیس کی گشتی پارٹی پر فائرنگ سے اے ایس آئی سمیت دو اہلکار شہید اور ڈرائیور زخمی ہو گیا ۔ لیویز ذرائع کے مطابق پولیس کی جوابی فائرنگ سے حملہ آور اشتہاری ملزم ہلاک ہو گیا جبکہ سوات میں سکیورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان جھڑپ سے ایک اہلکار شہید جبکہ3دہشت گرد ہلاک ہو گئے۔ جبکہ لاہور میں کائونٹر ٹیررزم ڈیپارٹمنٹ (سی ٹی ڈی) نے راوی روڈ کے علاقے میں کارروائی کرتے ہوئے داعش سے تعلق رکھنے والے مبینہ دہشت گردوں کو گرفتار کر کے بھاری مقدار میں دھماکہ خیز مواد، ڈیٹونیٹر اور خود کش دھماکے میں استعمال ہونے والا سامان برآمد کر لیا جبکہ سرچ آپریشن کے دوران 26مشتبہ افراد پکڑے گئے۔ تفصیلات کے مطابق سوات کے علاقہ تلی گرام میں سکیورٹی فورسز نے دہشت گردوں کے ٹھکانے پر چھاپہ مارا تو دہشت گردوں نے فائرنگ کردی۔ فائرنگ کے تبادلے میں ایک سکیورٹی اہلکار شہید‘3 دہشت گرد ہلاک ہوگئے۔ ادھر بلوچستان کے ضلع کیچ سے تین مغوی افراد کی تشدد زدہ نعشیں برآمد ہوئی ہیں، تینوں نعشیں کپکپار کراس کے علاقے سے برآمد کی گئیں۔کیچ میں انتظامیہ کے ذرائع کے مطابق مارے جانے والے تینوں افراد کی شناخت ہوئی ہے جن کا تعلق ضلع کیچ کے علاقے دشت سے تھا۔ ان تینوں افراد کو ہلاک کرنے کی ذمہ داری کالعدم عسکریت پسند تنظیم بلوچستان لبریشن فرنٹ نے قبول کی ہے۔ ادھر خیر پور میں سیٹھا راجہ اور رانی پور کے درمیان ریلوے ٹریک پر عوامی ایکسپریس کو اڑنے کا منصوبہ نا کام ہو گیا اور دھماکے سے 3فٹ سے زائد پٹری کا ٹکڑا اڑ گیا دیسی ساخت کا 3کلو گرام وزنی بم کو ڈوائز کے ذریعے اڑایا گیا۔ سیٹھا راجہ اور خیر پور روہڑی سٹیشنوں پر ٹرینیں روک دی گئیں۔ اتوار کی شام کو سیٹھا راجہ اور رانی پور ریلوے اسٹیشن کے درمیان جنید شاہ کے مقام پر نا معلوم دہشت گردوں نے ریلوے ٹریک پر بم نصب کر رکھا تھا۔ واضح رہے کہ کچھ دیر پہلے وہاں سے عوامی ایکسپریس گزری تھی۔ پشاور سے صباح نیوز کے مطابق پشاور پولیس نے حیات آباد میں سرچ آپریشن کرتے ہوئے100افراد کو گرفتار کر کے اسلحہ اور منشیات برآمد کر لیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ 59افراد کو دفعہ 144کی خلاف ورزی پر گرفتار کیا گیا، گرفتار افراد سے 1پستول ، 1رپیٹر، کارتوس اور منشیات برآمد کی گئی۔علاوہ ازیں انٹیلی جنس اداروں کے مطابق تھانہ خزانہ اور دائود زئی کی حدود میں پولیس پارٹیوں پر ہونے والے حالیہ دو بم دھماکوں اور پولیس اہلکار کی ٹارگٹ کلنگ میں تحریک طالبان مہمند ایجنسی اور جماعت الاحرار کے کارندے ملوث ہیں جنہوں نے پہلے سے مبینہ طور پر زمین کے اندر بارودی مواد چھپایا ہوا ہے اور اسے دھماکوں کیلئے استعمال کرتے ہیں۔ادھر لاہور میں ٹی ٹی ڈی نے راوی روڈ کے علاقہ بتی چوک میں کارروائی کرتے ہوئے داعش سے تعلق رکھنے والے 3مبینہ دہشت گردوں طارق محمود، عیسی خان اور غلام نبی کو گرفتار کر کے ان کے قبضے سے15سو گرام دھماکہ خیز مواد ، ڈیٹو نیٹر، الیکٹرک سرکل اور خود کش دھماکے میں استعمال ہونے والا سامان برآمد کر لیا ہے۔ قبضے سے اہم سرکاری عمارتوں کے نقشے بھی برآمد ہوئے ہیں ادھر خانیوال میں پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے سرچ آپریشن 9مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا۔ شیخوپورہ سے نامہ نگار خصوصی کے مطابق سی ٹی ڈی کے عملہ نے کالعدم تنظیم کے دوکار کنوں خالہ منظور اور تنویر احمد کو گرفتار کر کے انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت 30روز کیلئے ڈسٹرکٹ جیل میں نظر بند کر دیا ہے۔ٹھٹھہ سے بیورو رپورٹ کے مطابق کراچی سے پنجاب جانے والی ملت ایکسپریس میں بم کی اطلاع پر ٹرین کو ہنگامی بندوں ٹھٹھہ ضلع کو حدود بر اد آباریلوے اسٹیشن پر روک لیا گیا تلاشی لینے کے لئے بم ڈسپوزل عملہ موجود نہ ہونے کی وجہ سے ٹرین کو کوٹری روانہ کر دیا گیا۔