شمالی وزیرستان : فورسز کی گاڑی پر بم حملہ‘ اہلکار جاں بحق ‘ کرفیو نافذ‘ پارہ چنار میں کار بم دھماکہ‘ ڈرائیور ہلاک

پشاور(نیٹ نیوز+ایجنسیاں) خیبر پی کے، کے قبائلی علاقوں میں گولہ باری بم دھماکے اور فائرنگ کے واقعات میں بچی فورسز کا ایک اہلکار اور ایک قبائلی باشندہ جاں بحق، 5 شدید زخمی ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق خیبرایجنسی کے علاقے اکاخیل میں ایک گھر پر مارٹر گولہ فائر کیا گیا، حملے میں ایک بچی جاں بحق ہوگئی۔ گولہ کس نے فائر کیا مرنیوالی بچی کون تھی؟ اس سے متعلق تفصیلات ظاہر نہیں کی گئیں۔ ادھر شمالی وزیرستان میں بنوں میران شاہ روڈ پر فورسز کی گاڑی کو سڑک پر نصب ریموٹ کنٹرول بم سے نشانہ بنایا گیا دھماکے سے فورسز کا ایک اہلکار حبیب جاں بحق اور دو زخمی ہوگئے۔ ادھر شمالی وزیرستان میں پولیٹکل انتظامیہ نے غیر معینہ مدت کے لئے کرفیہ لگا دیا جس سے وہاں کے رہائشیوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے بنوں روڈ، غلام خان روڈ، دتہ خیل روڈ اور رزمک روڈ پر ٹریفک بلاک ہونے سے سینکڑوں گاڑیاں پھنس گئیں۔ علاوہ ازیں کرم ایجنسی میں صدہ کے قریب کار میں دھماکہ سے ڈرائیور ہلاک‘ تین افراد شدید زخمی ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق اپر کرم ایجنسی کے گاﺅں مالی خیل سے تعلق رکھنے والے چار افراد اقبال حسین‘ حاجی شبیر حسین‘ مجاہد حسین اور باقر حسین گاڑی میں شادی میں شرکت کیلئے اتوار کو لوئر کرم ایجنسی کے علاقہ کارخانے کیمپ گئے جہاں نامعلوم دہشت گردوں نے ان کی کار میں ٹائم بم نصب کردیا جو واپسی پر راستے میں کارخانو پھاٹک کے قریب زوردار دھماکے کیساتھ پھٹ گیا جس کے نتیجے میں ڈرائیور اقبال حسین موقع پر ہلاک جبکہ کار میں بیٹھے حاجی شبیر حسین‘ مجاہد حسین اور باقر حسین شدید زخمی ہوگئے۔ دھماکے میں ہلاک ہونے والے ڈرائیور کی لاس پارا چنار پہنچائی گئی جبکہ زخمیوں کو ہنگو اور صدہ کے ہسپتالوں میں منتقل کردیا گیا۔