انجینئرنگ یونیورسٹی کے ہاسٹل پر بھی چھاپہ، القاعدہ کے 2مشتبہ رہنما گرفتار

لاہور (نوائے وقت رپورٹ+ نامہ نگار) حساس ادارے اور پولیس نے پنجاب یونیورسٹی سے القاعدہ کے مشتبہ کارکنوں کی نشاندہی پر گذشتہ روز انجینئرنگ یونیورسٹی پر چھاپہ مارا اور ہاسٹل سے القاعدہ سے تعلق رکھنے کے الزام میں 2افراد کو گرفتار کرکے تفتیش کیلئے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا۔ ہاسٹل کے اس کمرے سے جہاں یہ دونوں مشتبہ افراد ٹھہرے تھے درجنوں شناختی کارڈ، سینکڑوں ریموٹ کنٹرول ڈیوائسز سرکٹ بورڈ اور سم کارڈ برآمد کر لئے گئے، پکڑے گئے دونوں افراد پاکستانی ہیں اسی طرح دو روز میں لاہور سے پکڑے جانیوالے القاعدہ کے مشتبہ کارکنوں کی تعداد 7ہو گئی۔ بتایا گیا ہے پنجاب یونیورسٹی کے ہاسٹل سے شہزاد نامی طالب علم اور اسکے دو ساتھیوں کو گذشتہ رات حراست میں لیا گیا، نوجوان شہزاد ایم فل اسلامک سٹڈیز کا طالب علم اور اس کا والد حاجی اکرم پنجاب یونیورسٹی کا ڈرائیور ہے۔ شہزاد سے متعلق بتایا گیا ہے کہ وہ بم بنانے کا ماہر ہے اور ایک مرتبہ افغانستان بھی جا چکا ہے انکے ساتھ ساتھ گرین ٹائون بلاک اے سے پکڑے گئے ریٹائرڈ میجر ڈاکٹر اور انکے بیٹے کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی تاہم یہ اطلاعات ملی ہیں کہ دونوں کی عرصے سے سرگرمیاں مشکوک تھیں اور انکے بھی القاعدہ سے رابطے ہیں۔ دریں اثناء  پنجاب یونیورسٹی ہاسٹل سے پکڑے جانے والے حافظ شہزاد اکرم کے والد حاجی محمد اکرم نے نجی ٹی وی کو بتایا کہ ان کے بیٹے کا القاعدہ سے کوئی تعلق نہیں، 15روز سے اپنے بیٹے کو نہیں دیکھا۔ حاجی محمد اکرم کا کہنا ہے کہ شہزاد 3ستمبر کو نامعلوم شخص کا فون سننے کے بعد گھر سے گیا، پھر واپس نہیں آیا، ان کی درخواست پر پولیس نے ایف آئی آر بھی درج کر لی ہے مگر اس کا کوئی پتہ نہیں۔ شہزاد کی والدہ کا کہنا تھا وہ چھ بہن بھائیوں میں سب سے چھوٹا، نمازوں کا پابند اور دینی کتب پڑھنے کا شوق رکھتا ہے۔ انہوں نے کہا انہوں نے حق حلال کی کمائی سے اپنے بچوں کی پرورش کی، ضعیف عمری میں بیٹے کی جدائی نے کمر توڑ کر رکھ دی۔ ادھر ایک نجی ٹی وی کے مطابق انجینئرنگ یونیورسٹی کے وائس چانسلر لیفٹیننٹ جنرل ’ر‘ محمد اکرم نے گذشتہ رات جاری وضاحتی بیان میں کہا کہ یوای ٹی میں ہر قسم کی سیاسی اور عسکری سرگرمیوں پر پابندی عائد ہے۔ یونیورسٹی ہاسٹل سے کسی طالب علم کی گرفتاری نہیں ہوئی ۔انہوں نے کہاکہ ہمارا اپنا سکیورٹی کا نظام ہے اور کسی بھی غیرمتعلقہ یا بیرونی عناصر کو ہاسٹل میں ٹھہرانے کی اجازت نہیں۔