فلنگ سٹیشن مالکان ایل این جی درآمد اور قیمت مقرر کرنے کے مجاز ہونگے، نئی پالیسی نافذ

اسلام آباد(خبرنگار) ایل این جی کی درآمد کے باعث وزارت پٹرولیم نے سی این جی سیکٹر کیلئے نئی پالیسی نافذ کردی ہے۔ پنجاب کے سی این جی اسٹیشن مالکان براہ راست ایل این جی درآمد اور قیمت مقرر کرنے کے مجاز ہونگے، ٹیکسوں اور کسٹم ڈیوٹی پر بھی چھوٹ ملے گی۔ وزارت پٹرولیم نے سی این جی سیکٹر کیلئے اقتصادی رابطہ کمیٹی کی منظورکردہ نئی پالیسی نافذ کردی ہے۔ نوٹیفکیشن کے مطابق ایل این جی کی درآمد شروع ہونے کے باعث نئی پالیسی نافذ کی گئی ہے۔ آئندہ ماہ پنجاب میں سی این جی قیمت کا موجودہ میکنزم ختم ہوجائیگا۔ ایل این جی کے باعث سی این جی مالکان قیمت کا خودتعین کرینگے۔ سی این جی گیس انفراسٹرکچرڈویلپمنٹ سرچارج سے مستثیٰ ہوگی۔ سی این جی صارفین پر جی ایس ٹی صرف 5فیصد لاگوہوگا۔ سی این جی مالکان کو ایل این جی درآمد کرنے کی اجازت دیدی گئی ہے۔ سٹیشن مالکان کو ایل این جی کے ذریعے بجلی پیدا کرنے کی اجازت ہوگی۔ ایل این جی سے متعلقہ مشینری خریدنے پر کسٹم ڈیوٹی کی چھوٹ ہوگی۔ سی این جی سیکٹر کے نمائندوں کے مطابق اس اقدام سے ملک میں جاری توانائی بحران کا خاتمہ ہوگا اور پنجاب میں سی این جی اسٹیشن پورا ہفتہ کھل سکیں گے۔ وزیراعظم اور وزیر پٹرولیم کے اقدام کے باعث 450 ارب روپے مالیت کی سی این جی صنعت دوبارہ بحال ہونے کے امکانات پیدا ہوگے ہیں۔ ایل این جی درآمد اور ٹرانسپورٹ کرنے کیلئے یونیورسل گیس ڈسٹری بیوش کمپنی قائم کر دی گئی ہے۔