بھارت پاکستان میں موجود دہشت گردوں کا بڑا ہدف ہے: بھارتی وزیر کی ہرزہ سرائی

نئی دہلی (آن لائن) بھارت کے وزیر مملکت وزیر داخلہ ہری بھائی پریتھائی چودھری نے لوک سبھا میں تقریر کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت پاکستان میں موجود دہشتگرد گروپوں کا بڑا ہدف ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ بھارت میں قید کئی دہشتگردوں سے تفتیش کے دوران پتہ چلا ہے کہ پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی بھارت میں دہشتگردوں کی سرپرستی کر رہی ہے اور انہیں مالی مدد اور تربیت دینے میں ملوث ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ دہشتگرد دھماکہ خیز مواد اور اسلحہ درآمد کرنے کیلئے پاک بھارت اور بھارت نیپال کی سرحدیں استعمال کر رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ان دہشتگردانہ کارروائیوں میں بھارت کے کئی ریٹائر سرکاری اہلکار بھی ملوث ہیں۔ مزید برآں بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے کہا ہے کہ پاکستان کے ساتھ مذاکرات کے آئندہ دور کا انعقاد زیر غور ہے اور حالات کا جائزہ لینے کے بعد ہی دوسرے دور کے مذاکرات ہونگے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت پڑوسی ملک کے ساتھ تعلقات کو نئی جہت دینے اور نئی تاریخ رقم کرنے کے لئے کوشاں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس بات سے بخوبی آگاہ ہیں کہ دونوں ممالک کے درمیان تمام مسائل کے حل کے لئے مذاکرات واحد راستہ ہیں اور یہی وجہ ہے کہ مذاکرات کے آئندہ دور کے آغاز کے لئے بھی صورتحال کا جائزہ لیا جا رہا ہے تاہم انہوں نے کہا کہ پاکستان کو بھی مذاکرات کے لئے سازگار ماحول پیدا کرنے کے حوالے سے اپنا مثبت کردار ادا کرنا ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ دہشتگردی اور مذاکرات دونوں نہ تو ماضی میں ایک ساتھ چل سکے ہیں اور نہ ہی ایسے ہو سکتا ہے۔